مغرب میں موجود یہودی لا بی دنیا میں تیسری جنگ عظیم کی راہ ہموار کر رہی ہے ۔سراج الحق کا تیمر گرہ میں پریس کانفرنس سے خطاب

مغرب میں موجود یہودی لا بی دنیا میں تیسری جنگ عظیم کی راہ ہموار کر رہی ہے ۔  مغرب نے ہمیشہ گستاخان رسول ﷺکو پناہ اور سیکورٹی فراہم کی ہے جس سے مجرموں کو حو صلہ افزائی ملی ہے۔جماعت اسلا می گستاخانہ خاکوں کے خلاف 23جنوری کو اسلام آباد،لاہور اور کراچی میں ملین مارچ کر ے گی۔سراج الحق کا تیمر گرہ میں پریس کانفرنس سے خطاب

Siraj 19-1-2015 Dir

لوئر دیر/ پشاور19جنوری 2015ء
پشاور/ لوئردیر( )
جماعت اسلامی پاکستان کے امیر سر اج الحق نے کہا کہ مغرب میں موجود یہودی لا بی دنیا میں تیسری جنگ عظیم کی راہ ہموار کر رہی ہے۔ مغرب نے ہمیشہ گستاخان رسول ﷺکو پناہ اور سیکورٹی فراہم کی ہے جس سے مجرموں کو حو صلہ افزائی ملی ہے ،جماعت اسلا می گستاخانہ خاکوں کے خلاف 23جنوری کو اسلام آباد،لاہور اور کراچی میں ملین مارچ کر ے گی۔ جماعت اسلامی پاکستان کے مرکزی میڈیا سیل منصورہ سے جاری پریس ریلیز کے مطابق ان خیالات کا اظہار انھوں نے تیمرگرہ میں پریس کانفرس سے خطاب کر تے ہو ئے کیا ،اس موقع پررکن قومی اسمبلی صاحبزادہ محمد یعقوب خان،صوبائی اسمبلی کے رکن سعید گل اور جماعت اسلامی کے ضلعی امیر اعزاز الملک بھی موجود تھے۔ سراج الحق نے کہا کہ تحفظ ناموس رسا لت ﷺ ہمارے لئے زندگی اور موت کا مسئلہ ہے اورہم ناموس رسالت ﷺ کیلئے جان کی قربانی سے دریغ نہیں کر سکتے ،انھوں نے کہا کہ توہین رسالت پرحکومتی خاموشی ایک بزدلانہ اور مجرمانہ فعل ہے اور حکمران اپنے بزدلانہ رویے سے عوام کو مجبور کر رہے ہیں کہ وہ سڑکوں پر آکر تشدد کا راستہ اپنائیں،سراج الحق نے کہا کہ اقوام متحدہ عالمی سطح پر ایسی قانون سازی کرے کہ کسی بھی مذہب کے پیغمبراور مذہبی رہنماؤں کی شان میں گستاخی نہ ہو،انھوں نے سیاسی جماعتوں سے اپیل کی ہے کہ وہ بلا تفریق ہمارے ملین مارچ میں شریک ہوں کیونکہ یہ ذاتی یا سیاسی مفادات کیلئے نہیں بلکہ ہمارے ایمان کا تقاضاہے کہ ہم اس ملین مارچ کو مشترکہ طور پر کامیاب بنائیں،سراج الحق نے کہا کہ یورپی ممالک نے ہمیشہ گستاخان رسول ﷺکی سرپرستی کی ہے، جو ہمارے حکمرانوں کیلئے باعث شرم ہے انھوں وزیر اعظم سے مطالبہ کیا کہ فی الفور او آئی سی کا اجلاس بلانے کی کوشش کریں ،سراج الحق نے حکومت سے یہ مطالبہ بھی کیا کہ گستا خانہ خاکوں کے خلاف 23جنوری کو ملک بھر میں عا م تعطیل کا اعلان کیا جائے اور پوری قوم اس دلخراش واقعہ کے خلاف سڑکوں پر آکر اپنے نبی مہربان ﷺ سے عشق و محبت کا اظہار کرے،انھوں نے کہا کہ حکومت کو چاہئے کہ 22 ویں ترمیم ایوان میں پیش کرے تاکہ مذہبی جماعتوں کے تحفظات دور ہو سکیں،انہوں نے کہا کہ 21ویںآئینی ترمیم کے ذریعے مذہب کو دہشت گر دی کے ساتھ جوڑدیا گیا ہے ،جو مذہبی جماعتوں کو کسی طور قبول نہیں ہے،انہوں نے کہا کہ امریکہ اور اس کے حواریوں کا یہی ایجنڈا تھا کہ اسلام کو دہشت گردی کے ساتھ نتھی کردیا جائے ،ایک سوال کے جواب میں انھوں نے سر کاری سکولوں میں اساتذہ کو اسلحہ دینے کی تجویز کو مسترد کر تے ہوئے کہاکہ خوف وہراس پھیلانا اچھی بات نہیں ، اساتذہ کو بندوقیں پکڑانے سے تعلیمی ماحول پر انتہائی خطرناک اثرات مرتب ہونگے۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s