پشاور نے بڑے دکھ سہے ہیں امن ،محبت اور پھولوں کے شہر کے نام سے مشہور پشاور گذشتہ تین عشروں سے پاکستان کی ناکام پالیسیوں کی وجہ سے بد امنی کا شکار ہے،شہریوں کی خوشیوں اور پشاور کی عظمت رفتہ کو بحال کرنا حکومت کی اولین ذمہ داری ہے ۔امیر جماعت اسلامی سراج الحق کی پشاور ایم ایز ہاسٹل میں اراکین اسمبلے سے گفتگو

sirajulhaq 19-2-2015

پشاور1 مارچ2015ء
امیر جماعت اسلامی پاکستان سراج الحق نے کہا ہے کہ پشاور نے بڑے دکھ سہے ہیں امن ،محبت اور پھولوں کے شہر کے نام سے مشہور پشاور گذشتہ تین عشروں سے پاکستان کی ناکام پالیسیوں کی وجہ سے بد امنی کا شکار ہے،شہریوں کی خوشیوں اور پشاور کی عظمت رفتہ کو بحال کرنا حکومت کی اولین ذمہ داری ہے ،مخلوط حکومت کی اجتماعی جدوجہد سے پشاور پاکستان کا استنبول بن جائیگا ان خیالات کا اظہار انہوں نے خیبر پختونخواکے ایم پی ایز ہاسٹل میں صوبائی سینئر وزیر عنایت اللہ خان ،وزیر اوقاف حاجی حبیب الرحمان ،وزیر خزانہ مظفر سید کے ہمراہ خیبر پختونخوا کے اراکین اسمبلی کے مختلف وفود سے بات چیت کرتے ہوئے امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے کہا ہے کہ پشاور شہر کو ایک ماڈل شہر اور کلین اور گرین بنانے کیلئے اجتماعی جدوجہد کی ضرورت ہے ،پشاور جو امن محبت اور مہمان نوازی اور پھولوں کے شہر کے نام سے مشہور تھا تین عشروں سے پاکستان کی ناکام پالیسیوں کی وجہ سے بدامنی کا شکار ہے اب پشاور کی عظمت رفتہ ،اور شہریوں کی خوشیوں کو بحال کرنا صوبائی حکومت کی اولین ذمہ داری ہے ،وزیر اعلیٰ کی سرکردگی اور نگرانی میں صوبائی حکومت کامیابی کے ساتھ منزل کی طرف بڑھ رہی ہے ۔ امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے صوبائی وزیر بلدیات و سینئر وزیر عنایت اللہ خان کو ہدایت کی وہ پشاور کے مفتی محمود اورفلائی سمیت دیگر میگا پراجیکٹ پر توجہ دیکر جلد از جلد مکمل کرلیں انہوں نے پشاور شہر کی سڑکوں کو کشادہ کرنے اور شاہراہوں کو خوبصورت بنانے پر صوبائی حکومت اور خاص طور پر صوبائی وزیر بلدیات عنایت اللہ خان کو خراج تحسین پیش کیا اور کہا کہ پشاور کو صاف اور سرسبز شہر بنانا صوبائی حکومت اور شہریوں کی اجتماعی ذمہ داری ہے انہوں نے کہا کہ کرپشن اور کمیشن خوری کے خلاف مہم کو نتیجہ خیز بنایا جائے انہوں نے کہا کہ منتخب ممبران کی کامیابی میریٹ کی بالادستی میں ہے انہوں نے کہا کہ شہریوں کو صاف پانی ،ہسپتالوں میں علاج کی سہولیات کی فراہمی شہریوں کا مطالبہ ہے اسلئے میگا پراجیکٹ کے ساتھ ساتھ عوام کی بنیادی ضرورتوں پر بھی توجہ دی جائے۔انہوں نے کہاکہ مخلوط حکومت اور شہریوں کی اجتماعی جدوجہد کے نتیجے میں پشاور کو پاکستان کا استنبول بنایا جائیگا اور اسی جدوجہد کے آثار اب پشاور کے شاہراہوں پر نظر آنا شروع ہوچکے ہیں ۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s