مسائل کے حل کی چابی اسلام آباد میں ہے، جب تک اسلام آباد میں انقلاب نہیں آتا ، اٹھارہ کروڑ عوام کی حالت نہیں بدلے گی ۔ عام آدمی کے مسائل کے حل کے لیے ملک کو نظام مصطفےٰ کی ضرورت ہے ۔گورنر اور وزرائے اعلیٰ ہاﺅسز میں مغل شہزادے بیٹھے ہیںجنہیں عوام کی پریشانیوں سے کوئی سروکار نہیں ۔ ملک کو ایٹم بم سے بھی زیادہ اچھی قیادت کی ضرورت ہے ۔سینیٹر سراج الحق کا ہری پور میں جلسہ عام سے خطاب

siraj2

ھریپور10مارچ 2015ئ
    امیر جماعت اسلامی پاکستان سراج الحق نے کہاہے کہ مسائل کے حل کی چابی اسلام آباد میں ہے، جب تک اسلام آباد میں انقلاب نہیں آتا ، اٹھارہ کروڑ عوام کی حالت نہیں بدلے گی ۔ عام آدمی کے مسائل کے حل کے لیے ملک کو نظام مصطفےٰ کی ضرورت ہے ۔گورنر اور وزرائے اعلیٰ ہاﺅسز میں مغل شہزادے بیٹھے ہیںجنہیں عوام کی پریشانیوں سے کوئی سروکار نہیں ۔ ملک کو ایٹم بم سے بھی زیادہ اچھی قیادت کی ضرورت ہے ۔ قومی یکجہتی ، کشمیر کی آزادی اور غربت ، مہنگائی اور بے روزگاری کے مسائل کے خاتمہ کے لیے باکردار قیادت کا انتخاب ضروری ہے ۔ شریعت کے قوانین سے معصوم اور بے گناہ لوگوں کو ڈرنے کی ضرورت نہیں ، شریعت کے قوانین چوروں ، لٹیروں ، رسہ گیروں اور قاتلوں کے لیے سخت جبکہ عوام کے لیے نرم ہوتے ہیں ۔ جماعت اسلامی کے مرکزی میڈیا سیل کے پریس ریلیز کے مطابق ان خیالات کا اظہار انہوں نے ہری پور کے ایلمنٹری کالج کی گراﺅنڈ میں بڑے عوامی جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔جلسہ سے سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی کے پی کے شبیر احمد خان ، نائب امیر معراج الدین خان ایڈووکیٹ ،سینئر صوبائی وزیر اوروزیر بلدیات عنایت اللہ خان اور ضلعی امیر غزن اقبال نے بھی خطاب کیا ۔
    سراج الحق نے کہاکہ وزیراعظم کی طرف سے پیپلز پارٹی کے امیدوار رضا ربانی کے چیئرمین سینیٹ کی حمایت خوش آئند ہے ۔ ہم اس اتفاق رائے کا خیر مقدم کرتے ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ ملک میں وسیع پیمانے پر مفاہمت کی سیاست کو فروغ دینے کی ضرورت ہے ۔اس کے لیے میں وزیراعظم کو مشورہ دیتاہوں کہ وہ تحریک انصاف کو اسمبلیوں میں لانے کے لیے ڈپٹی چیئرمین سینیٹ کا عہدہ پی ٹی آئی کو دیا جائے ۔سراج الحق نے کہاکہ اب وقت ہے کہ سیاسی جماعتیں نفرتوں کی بجائے محبت کو فروغ دیں اور مل کر ملک کو بحرانوں سے نجات دلائیں ۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان میں غربت ، مہنگائی ، بے روزگار ی اور بدامنی نے غریب عوام کا جینا دوبھر کر دیاہے ۔ لوگ سیاسی قیادت سے سخت مایوس ہیں ، عوام کا اعتماد بحال کرنے کے لیے ان کے مسائل کیے جائیں ۔
     سراج الحق نے کہاکہ سینیٹ انتخابات میںممبران اسمبلی نے ضمیر کے سوداگروں کی کوششوں کو ناکام بنا کر سیاسی پختگی کا ثبوت دیا ہے۔ انہوں نے اس امید کا اظہار کیا کہ آئندہ الیکشن میں بھی دولت کی سیاست کرنے والوں کو ناکامی کا منہ دیکھنا پڑ ے گااور عوام ایسے نمائندوں کا انتخاب کریں گے جو دیانتدار ی ان کی امانتوں کا تحفظ کر سکیں ۔ انہوں نے کہاکہ جماعت اسلامی کی قیادت کے دامن پر کرپشن کا کوئی داغ نہیں ۔ ہم اقتدار میں آ کر ملک کو دنیا کی ترقی یافتہ ، خوشحال ریاست بنائیں گے ۔ انہوں نے کہاکہ چوروں اور لٹیروں کاکڑا احتساب کیا جائے گا اور جن لوگوں نے 67 سال میں ملک کو لوٹ کر بیرون ملک اپنی جائیدادیں بنائی ہیں ان سے ایک ایک پائی کا حساب لیا جائے گا۔
    سراج الحق نے مساجد اور مدارس پر چھاپے مار ے جانے کے بڑھتے ہوئے واقعات کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہاکہ وزیراعظم کو اس کا سختی سے نوٹس لینا چاہیے ۔ انہوں نے کہاکہ دہشتگردی کرنے والوںکا تعلق کسی بھی گروہ سے ہو ،اسے ضرور سزا ملنی چاہیے مگر اس کی آڑ میں مدارس پر شب خون مارنے اور علما ئے کرام کی تضحیک اور پکڑ دھکڑ کی اجازت نہیں دی جائے گی ۔ انہوں نے کہاکہ ملک میں افغان مہاجرین کو بلاوجہ تنگ کرنے کا سلسلہ بھی بند ہوناچاہیے ۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s