پاک ایران گیس معاہدہ فوری طو ر پر مکمل کیا جائے ۔ ایران کے ساتھ بارڈر قوانین میں نرمی کی جائے تاکہ لوگوں کو آمد و رفت میں آسانی ہو۔ پاکستان کو بلوچ نوجوانوں سے نہیں اسلام آباد کے ظالم حکمرانوں سے خطرہ ہے ۔ بلوچستان کے حقوق پر توجہ نہ دی گئی تو یہ آتش فشاں بن جائے گا ۔ ملک سے استحصالی معیشت اور سودی نظام کا خاتمہ کر کے ہی اسے خوشحال اور ترقی یافتہ بنایا جاسکتاہے ۔سراج الحق کا گوادر میں جلسہ سے خطاب

    gawar jalsa 1

لاہور20مارچ 2015ئ
    امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نےمطالبہ کیاہے کہ پاک ایران گیس معاہدہ فوری طو ر پر مکمل کیا جائے ۔ ایران کے ساتھ بارڈر قوانین میں نرمی کی جائے تاکہ لوگوں کو آمد و رفت میں آسانی ہو۔ پاکستان کو بلوچ نوجوانوں سے نہیں اسلام آباد کے ظالم حکمرانوں سے خطرہ ہے ۔ بلوچستان کے حقوق پر توجہ نہ دی گئی تو یہ آتش فشاں بن جائے گا ۔ ملک سے استحصالی معیشت اور سودی نظام کا خاتمہ کر کے ہی اسے خوشحال اور ترقی یافتہ بنایا جاسکتاہے ۔اسلامی پاکستان خوشحال بلوچستان کی ضمانت ہے ۔ جماعت اسلامی کے مرکزی میڈیا سیل کے مطابق ان خیالات کااظہار انہوں نے گوادر میں خواتین اور مردوں کے الگ الگ جلسوں سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ جلسہ سے امیر جماعت اسلامی بلوچستان عبدالمتین اخونزادہ اور امیر ضلع گوادر محمد سعید نے بھی خطاب کیا ۔
    سراج الحق نے کہاکہ ملک میں مسلح دہشتگردی کی وجہ سیاسی اور معاشی دہشتگردی ہے ۔ پیپلز پارٹی اور ن لیگ میں ایک طبقہ اور خاندانوں کے لوگ ہیں اس سیاسی اور معاشی مافیا نے پورے ملک کو یرغمال بنارکھاہے ۔ اقتدار کے ایوانو ں پر قابض ان سیاسی پنڈتوں اور برہمنوں کو عوام کے مسائل سے کوئی سروکار نہیں ۔ یہ وہی لوگ ہیں جنہوں نے انگریزوں سے وفاداری اور ملت سے غداری کے عوض جاگیریں حاصل کیں اور آج تک وہ سامراجی قوتوں کے ہی وفادار ہیں ۔ انہیں مجبور وں ، محروموںاور مظلوموں کی آہیں سنائی نہیں دیتیں۔ ملک کے مسائل کے اصل ذمہ دار یہی لوگ ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ سیاسی قائدین کے ہمراہ جا کر بلوچستان کے پہاڑوں اور غاروں میں بیٹھے ناراض نوجوانوں کو واپس لائیں گے ، یہ ہمارا خون ہیں ، انہیں پہاڑوں میں بیٹھنے کی بجائے اقتدار کے ایوانوں تک پہنچنا چاہیے تاکہ ملک و قوم کو ظالم اشرافیہ سے نجات دلائی جاسکے ۔بلوچستان کے عوام پاکستان کے خلاف نہیں بلکہ یہ تو وہ لوگ ہیں جنہوں نے سب سے پہلے پاکستان سے الحاق کا فیصلہ کیا تھا ۔بلوچستان کے عوام سے بڑھ کر ملک کا اور کوئی خیر خواہ نہیں ہوسکتا۔
    سینیٹرسراج الحق نے کہاکہ کروڑوں روپے خرچ کر کے اقتدار کے ایوانوں میں پہنچنے والے ملک و قوم کی نہیں اپنے خاندانوں کی خدمت کرتے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ عوام کے مسائل صرف وہ سمجھ سکتاہے جو عوام میں سے ہو ۔ انہوں نے کہاکہ میں دو بار صوبائی وزیر خزانہ رہا اور اب سینیٹر ہوں مگر میں آج بھی پشاور میں کرائے کے مکان میں رہتاہوں ۔ انہوں نے کہاکہ میں نے غربت میں آنکھ کھولی اور اپنی تعلیم جاری رکھنے کے لیے مزدوری کی ۔ جو لوگ اپنے علا ج کے لیے بیرون ملک جاتے ہیں اور جن کے بچے باہر کے ملکوں سے تعلیم حاصل کر تے ہیں انہیں غریب عوام کے دکھوں اور پریشانیوں کا کوئی ادراک نہیں ۔
    قبل ازیںسراج الحق نے گوادر میں خواتین کے جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ ملک میں لاپتہ افراد کی مائیں بہنیں اور بیٹیاں سراپا احتجاج ہیں جس ملک میں مائیں بہنیں اور بیٹیاں احتجاج پر مجبور ہو جائیں ،وہاں کے حکمرانوں کو اقتدار کے ایوانوں میں بیٹھنے کا کوئی حق نہیں ۔ انہوں نے کہاکہ ماں بہن اور بیٹی کے حقوق ادا نہ کرنے والوں کو الیکشن لڑنے کی اجازت نہیں ہونی چاہیے ۔ انہوں نے کہا کہ جو لوگ اپنی بیٹیوں کو تعلیم حاصل کرنے کی اجازت نہیں دیتے ان کے خلاف سخت قانونی کاروائی ہونی چاہیے ۔ سراج الحق نے گوادر میں بچیوں کے ڈگری کالج کی تعمیر کا مطالبہ بھی کیا۔سراج الحق نے گوادر پورٹ پر مچھیروں کو درپیش مسائل کی طرف توجہ دینے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہاکہ ماہی گیروں کی نسل کشی کی روک تھام ہونی چاہیے اور ماہی گیری سے وابستہ لوگوں پر بلاجواز پابندیوں کا خاتمہ کر کے انہیں ان کے لیے آسانیاں پیدا کی جائیں۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s