ملک پر مسلط ظالمانہ نظام کوجڑ سے اکھاڑ کرپھینکنے کیلئے عوام جماعت اسلامی کے دست وباز و بن جائیں ،گزشتہ 68سال سے ملکی اقتدار پر قابض لوگوں کو ملک و قوم کے مسائل سے کوئی سروکار نہیں۔ہر حکومت میں ایک ہی طبقہ اشرافیہ کے لوگ شامل ہیں جو ایک دوسرے کی کرپشن کو تحفظ اور اقتدار کوسہارا دیتے ہیں۔جماعت اسلامی اپنے مقاصد پر سمجھوتہ کیے بغیر اپنی تنظیم میں توسیع کیلئے وقت اور حالات کے مطابق اپنی پالیسیاں بدل رہی ہے۔ مستقبل قریب میں زندگی کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والی اہم شخصیات کو جماعت اسلامی میں شامل کرکے انہیں اہم ذمہ داریاں سونپی جائیں گی ۔سراج الحق کا منصورہ میں مرکزی ،صوبائی اور ضلعی ذمہ دار ان کی دوروزہ خصوصی تربیتی ورکشاپ سے خطاب

siraj 28

لاہور28مارچ2015ء
    امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے منصورہ میں جاری جماعت اسلامی کے مرکزی ،صوبائی اور ضلعی ذمہ دار ان کی دوروزہ خصوصی تربیتی ورکشاپ سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ ملک پر مسلط ظالمانہ نظام کوجڑ سے اکھاڑ کرپھینکنے کیلئے عوام جماعت اسلامی کے دست وباز و بن جائیں ،گزشتہ 68سال سے ملکی اقتدار پر قابض لوگوں کو ملک و قوم کے مسائل سے کوئی سروکار نہیں۔ہر حکومت میں ایک ہی طبقہ اشرافیہ کے لوگ شامل ہیں جو ایک دوسرے کی کرپشن کو تحفظ اور اقتدار کوسہارا دیتے ہیں۔جماعت اسلامی اپنے مقاصد پر سمجھوتہ کیے بغیر اپنی تنظیم میں توسیع کیلئے وقت اور حالات کے مطابق اپنی پالیسیاں بدل رہی ہے۔ مستقبل قریب میں زندگی کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والی اہم شخصیات کو جماعت اسلامی میں شامل کرکے انہیں اہم ذمہ داریاں سونپی جائیں گی ۔کھیلوں اور کلچر کے میدان میں نمایاں کارکردگی کے حامل نوجوانوں کو پورے ملک میںجماعت کے نظم میں سمویا جائے گا۔خواتین ،اساتذہ ،وکلاء،کسانوں مزدوروں اور طلباءو نوجوانوں کی بہت بڑی تعداد کو جماعت کے کارکن بنایا جائے گا۔
    سراج الحق نے کہا کہ کیمونزم اور سرمایہ دارانہ نظام کی شکست اور ناکامی کے بعد اب عالمی سطح پر موجود خلا کو پر کرنے کیلئے اسلامی تحریکوں کے پاس بہترین موقع ہے ،حالات کا تقاضا ہے کہ عالم اسلام اپنے اختلافات کو بالائے طاق رکھ کر دنیا کو اسلام کے عدل و انصاف اور مساوات پر مبنی نظام سے روشناس کرائے ،انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی ملک میں اسلامی انقلاب کیلئے ہر طرح کی قربانی پیش کرنے کیلئے تیار ہے ،ہم ملک میںایسا نظام حکومت چاہتے ہیںجس میں انسان ایک دوسرے کے غلام اور محتاج نہ ہوں اور سب کو یکساں حقوق مل سکیں ،انہوں نے کہا کہ اقتدار پر قابض ظالم جاگیرداروں اور بے رحم سرمایہ داروں نے ملک میں غربت ،جہالت ،مہنگائی بے روزگاری اور بدامنی کو ختم کرنے کی بجائے اسے فروغ دیا ہے ،مقتدر طبقہ نہیں چاہتا کہ ملک کے غریب غرباءکسان اور محنت کش ان کے برابر بیٹھ سکیں اس لئے انہوں نے ایک منصوبہ کے تحت عوام کو ایسے سنگین مسائل میں الجھا رکھا ہے کہ وہ ہمیشہ عسرت ،تنگ دستی اور پیٹ کی آگ بجھانے کی فکر میںمبتلا رہیں ۔انہوں نے کہاکہ اس استحصالی طبقے میں نیا اضافہ ملٹی نیشنل کمپنیوں کا بھی ہو گیاہے ۔ یہ وہ لوگ ہیں جو پہلے زرعی میدان میں بیماریاں پیدا کرتے ہیں اور پھر ان کے وقتی علاج پیش کر کے دونوں ہاتھوں سے مال بنارہے ہیں ۔ یہ طبقہ غیر مسلح رہ کر بھی دہشتگردی پھیلارہاہے۔
    سراج الحق نے کہا کہ ملک میں پنجابی سندھی ،بلوچ اور پٹھان کی نہیں ظالم اور مظلوم کی لڑائی ہے ،آج تک ملک پر افراد اور پارٹیوں کی حکومت رہی جنہوں نے قومی مفادات پر اپنے ذاتی مفادات کو ترجیح دی جس کی وجہ سے ملک مسائلستان بن گیا ،انہوں نے کہا کہ آنے والے بلدیاتی اور قومی انتخابات میں جماعت اسلامی ایک بڑی عوامی قوت بن کر سامنے آئے گی ،انہوں نے کہا کہ عوام کو بھی اپنی آئندہ نسلوں اور ملک کے مستقبل کی خاطر اپنا انتخابی رویہ بدلنا ہوگا،انہوں نے کہا کہ سانپوں کو دودھ پلا کر اژدھا بنانے والے اس کے ڈسنے سے محفوظ نہیں رہ سکتے ،انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی بلدیاتی اور قومی انتخابات میں خدمت کے جذبہ سے سرشار عوامی قیادت کو میدان میں اتارے گی۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s