ملک سے اسٹیٹس کو صرف جماعت اسلامی ہی ختم کر سکتی ہے۔جماعت اسلامی کی قیادت اور کارکنان اس چیلنج کو قبول کرتے ہیں،اسلامی و فلاحی پاکستان کی منزل اب زیادہ دور نہیں ،عوام اسٹیٹس کو کی حامی اور سیکولر قوتوں کو 68سال سے آزما رہے ہیں لیکن ملک کے حالات سدھرنے کے بجائے دن بدن ابتر ہوتے جارہے ہیں،ملک میں آئین کی بالادستی ہے نہ میرٹ کی حکمرانی ۔سینیٹر سراج الحق

siraj 21 3 copy

پشاور29مئی 2015ء
امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ ملک سے اسٹیٹس کو صرف جماعت اسلامی ہی ختم کر سکتی ہے۔جماعت اسلامی کی قیادت اور کارکنان اس چیلنج کو قبول کرتے ہیں،اسلامی و فلاحی پاکستان کی منزل اب زیادہ دور نہیں ،عوام اسٹیٹس کو کی حامی اور سیکولر قوتوں کو 68سال سے آزما رہے ہیں لیکن ملک کے حالات سدھرنے کے بجائے دن بدن ابتر ہوتے جارہے ہیں،ملک میں آئین کی بالادستی ہے نہ میرٹ کی حکمرانی ۔کرپٹ اور لٹیرے حکمران ملک کو دونوں ہاتھوں سے لوٹ ر ہے ہیں ۔غریب محنت کش باہر سے پیسہ کما کر ملک میں بھیجتے ہیں اور اقتدار کے ایوانوں میں بیٹھے ہوئے کرپشن کے بڑے بڑے کنگ قومی سرمائے کو لوٹ کر بیرونی بنکوں میں جمع کروادیتے ہیں ،غریب روٹی کے لقمے کو ترس رہے ہیں مگر بے حس ظالم حکمرانوں کو عوام کی ذرا برابر پروانہیں ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے جامع مسجد منصورہ میں جمعہ کے بڑے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔
سراج الحق نے کہا کہ سانحہ ڈسکہ اورماڈل ٹاﺅن جیسے واقعات اس ملک میں آئے روز پیش آتے ہیں ،درجنوں لوگوں کو گولیوں کا نشانہ بنا دیا جاتا ہے مگر ان کی ایف آئی آر درج کروانے کیلئے بھی دھرنا دینا اور مارچ کرناپڑتا ہے ،ملک میں قانون نام کی کوئی چیز نہیں ،حکمران اپنے آپ کو آئین و قانون اورہر قسم کے احتساب سے بالا تر سمجھتے ہیں ،ملک میںجمہوریت کے نام پربدترین آمریت مسلط ہے ،انہوں نے کہا کہ کرپشن اور لوٹ کھسوٹ میں جس کا جتنا بڑا نام ہے اتنے ہی اعلیٰ عہدے پر وہ براجمان ہے ۔قومی دولت لوٹ کر محل تعمیر کرنے والوں کو عوام بااثر سمجھ کر ووٹ دیتے ہیں کہ شاید وہ ان کے مسائل کی طرف بھی توجہ دیں گے مگر اقتدار میں آنے والے اپنی آنے والی نسلوں کیلئے دولت اکٹھی کرنا شروع کردیتے ہیں اور عوام کے حصہ میں ٹیکس اور بل دینے کے سوا کچھ نہیں آتا ،انہوں نے کہا کہ قیام پاکستان سے اب تک حکمران عوام کے ساتھ یہی چوہے بلی کا کھیل کھیل رہے ہیں ۔ سراج الحق نے کہا کہ جماعت اسلامی نے فیصلہ کیا ہے کہ مظلوم عوام کو ظلم کے اس چنگل سے نجات دلانے کیلئے کوئی کسر اٹھا نہیں رکھے گی ۔جماعت اسلامی کا ہر کارکن ظلم و جبر کے اس نظام کو الٹنے اورعوام کو ان ظالموںکے پنجے سے نکالنے کیلئے ہر قربانی دینے کو تیار ہے ،انہوں نے کہا کہ آئندہ بلدیاتی اور قومی انتخابات میں عوام ان لیٹروں کو کندھوں پر بٹھانے اور زندہ باد کے نعرے لگانے کے بجائے ملک میں نظام مصطفے ٰ کے نفاذ کیلئے جماعت اسلامی کا ساتھ دیں ۔
سراج الحق نے کہا کہ اسلام دشمن قوتیں اسلام کے بڑھتے ہوئے قدموں کو روکنے کیلئے مسلم ممالک میں حقیقی قیادت کا راستہ روک رہی ہیں ،اسلام کو بدنام اور ایک ظالم و جابر نظام ثابت کرنے کیلئے وہ میڈیا کے ذریعے گمراہ کن پروپیگنڈا کررہے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ سر کاٹنے اور ہاتھ پاﺅں کاٹنے کا واویلا کرکے وہ دنیا کو اسلام سے متنفر کر رہے ہیں تاکہ بدامنی کا شکار دنیا کوامن کے نظام سے دور رکھا جاسکے ،انہوں نے کہا کہ مغرب ظالمانہ سزاﺅں کا شور مچا کر اسلام کو ایک ظالم مذہب ثابت کرنا چاہتا ہے مگر اس کے باوجود روزانہ ہزاروں کی تعداد میں لوگ اسلام قبول کرکے گمراہی سے نکل کر اسلام کی روشنی میں آرہے ہیں ،انہوں نے کہا کہ اسلام سراسر امن و محبت اور اخوت کا دین ہے جس میں تمام انسانوں کیلئے بھلائی ہی بھلائی ہے ۔انہوں نے کارکنوں پر زور دیا کہ وہ عوامی رابطہ مہم جاری رکھیں اور ہر کارکن کم از کم ایک سو نئے ووٹر بنائے تاکہ آئندہ انتخابات میں بہت بڑی تبدیلی کے ذریعے ملک پر مسلط استحصالی نظام کا بوریا بستر گول کیا جاسکے۔  

Advertisements

اگر چین اپنے پسماندہ اور غریب صوبوں کی ترقی کیلئے آٹھ صوبوں کو اس کوریڈور سے ملا سکتا ہے توہم اپنے غریب صوبوں اور علاقوں کو اس کے ذریعے انقلابی ترقی سے کیوں ہمکنار نہیں کرسکتے ۔ سینیٹر سراج الحق

 
IMG_0102
لاہور28مئی 2015ء
امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے وزیر اعظم کی طرف سے بلائی گئی آل پارٹیز کانفرنس میں شرکت کے بعد پارلیمنٹ ہاﺅس کے باہر میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ آج کا دن پوری قوم کیلئے مبارک باد کا دن ہے ۔حکومت نے تمام سیاسی قیادت کو اقتصادی راہداری پر اعتماد میں لیا ہے اور ایک اتفاق رائے پیدا کرنے کی کوشش کی ہے ۔اقتصادی راہداری پر تمام جماعتوں کا متفق ہونا ملک و قوم کیلئے نہایت خوش آئند ہے ،انہوں نے کہا کہ اکنامک کوریڈور کو پورے ملک کیلئے فائدہ مند بنایا جانا چاہئے ،اگر چین اپنے پسماندہ اور غریب صوبوں کی ترقی کیلئے آٹھ صوبوں کو اس کوریڈور سے ملا سکتا ہے توہم اپنے غریب صوبوں اور علاقوں کو اس کے ذریعے انقلابی ترقی سے کیوں ہمکنار نہیں کرسکتے ،انہوں نے کہا کہ وفاقی حکومت کو چاہئے کہ وہ معاشی لحاظ سے کمزوراور غریب علاقوں کی ترقی اور ڈویلپمنٹ کیلئے اس نادر موقع سے فائدہ اٹھاتے ہوئے ان علاقوں کے عوام کو غربت سے نکالنے اور ترقی و خوشحالی کی راہ پر گامزن کرنے کیلئے اقتصادی راہداری منصوبے میں شامل کرے ،انہوں نے کہا کہ فاٹا انتہائی پسماندہ علاقہ ہے یہاں کے عوام تعلیم اور صحت کی بنیادی سہولتوں سے بھی محروم ہیں لہٰذافاٹا کو اس میں شامل کیا جانا چاہئے ،سراج الحق نے کہا کہ اکنامک کوریڈور کے موجودہ روٹ کے ساتھ حسن ابدال ،چترال اور گلگت تک متبادل راستہ بھی بنایا جانا ضروری ہے تاکہ ان علاقوں کے عوام کو بھی ترقی کے مواقع میسر آئیں ۔اس موقع پر جماعت اسلامی پاکستان کے سیکرٹری جنرل لیاقت بلوچ اور قومی اسمبلی میں جماعت اسلامی کے پارلیمانی لیڈر صاحبزادہ طارق اللہ خان بھی موجود تھے ۔

نادرا نے لوگوں کے شناختی کارڈ طویل مدت سے بلاک کرکے لوگوں کو ذہنی اذیت اور کوفت میں مبتلاء کردیا ہے۔ایک ایک شناختی کارڈ کی ویری فیکیشن کیلئے تمام تر ضروری تصدیق اور دیگر معلومات فراہم کرنے کے باوجود لو گوں کے شناختی کارڈ پھر بھی بلاک رہتے ہیں جسکی وجہ سے لوگوں کے بینک اکاؤنٹ منجمد ہوجاتے ہیں انکے لئے سفر کرنا پاسپورٹ بنوانا اور دیگر کاروباری سرگرمیاں سرانجام دینا تقریبا ناممکن ہوجاتا ہے انہوں نے کہا کہ ایک ایک شناختی کارڈ کیلئے پانچ پانچ ایجنسیوں کے سامنے لوگوں کو پیش ہونا پڑتا ہے ۔کاشغرگوادرروٹ کو تبدیل کیا گیا تویہ خیبرپختونخوا کے عوام کے ساتھ بہت بڑی زیادتی اور ناانصافی ہوگی۔۔امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹرسراج الحق

IMG_0102

پشاور27مئی2015ء 
امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹرسراج الحق نے کہا ہے کہ طے شدہ کاشغرگوادرروٹ کو تبدیل کیا گیا تویہ خیبرپختونخوا کے عوام کے ساتھ بہت بڑی زیادتی اور ناانصافی ہوگی،وزیر اعظم نواز شریف چاروں صوبوں کے وزیر اعظم بن کر فیصلے کریں ،چھیالیس ارب ڈالرکے پاک چین اقتصادی راہداری کے عظیم منصوبے کو وفاقی حکومت متنازعہ نہ بنائے ،نادراایک ماہ کے اندر اندر لاکھوں بلاک شدہ شناختی کارڈ کا مسئلہ حل کردے ورنہ بصورت دیگر عوام احتجاج پر مجبور ہونگے ،نادرا سے توقع تھی کہ وہ عوام کیلئے سہولیات پیدا کریگی لیکن الٹا اس ادارے نے عوام کیلئے لوگوں کے ناک میں دم کررکھا اور نہ حل ہونے والے مسائل پیدا کردئے،قیمتی پتھروں کا کاروبا ر کرنے والے ایکسپورٹرزکے مسائل کو تجیحی بنیادوں پر حل کرنے کیلئے وفاقی اور صوبائی حکومتوں اور سٹیٹ بینک کے ذمہ داران سے بات کرونگا،حکومتوں کی تھوڑی سی توجہ سے قیمتی پتھروں کے ایکسپورٹ سے کثیرزرمبادلہ حاصل کیا جاسکتا ہے ۔پشاورکی ترقی کیلئے وزارت بلدیات کی کارکردگی کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں ،پشاور کی عظمت رفتہ کو دوبارہ بحال کرنے کیلئے انتھک کوششیں ہورہی ہیں اور دو سال پہلے کے پشاور کے مقابلے میں آج کا پشاور زیادہ خوبصورت اور سرسبز اور پھولوں سے مزین نظر آرہاہے ۔جماعت اسلامی نے بلدیاتی انتخابات میں اہل اور دیانت دار امیدواروں کو ٹکٹ جاری کئے ہیں، عوام بلدیاتی انتخابات میں ترازو کے انتخابی نشان پر مہر لگائیں ۔35سال تک افغان مہاجرین کی میزبانی کرکے اب یکدم انکے ساتھ ناروا سختی اور انہیں ہزراساں کرنے سے افغانستان میں پاکستانی مفادات کونقصان پہنچے گا۔خیبرپختونخوامیں بدترین بجلی لوڈشیڈنگ بند کیجائے اور باالخصوص رمضان المبارک میں بجلی کی بلاتعطل فراہمی کو یقینی بنایا جائے ،خیبرپختونخوا سے نکلنے والے دریاؤں پر سستی بجلی پیدا کرنے کے وسیع مواقع موجود ہیں تو پھروفاقی حکومت مہنگی بجلی پیدا کرنے کے منصوبوں کو زیادہ توجہ کیوں دے رہی ہے ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے پشاور نمک منڈی میں آل پاکستان کمرشل ایکسپورٹرز ایسوسی ایشن کے صوبائی ہیڈکوارٹر میں ایسوسی ایشن کے عہدیداروں کے اجلاس سے خطاب اور بعد ازاں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا اس موقع پر سید منہاج الدین شاہ صدرآل پاکستان کمرشل ایکسپورٹرز ایسوسی ایشن ،جنرل سیکرٹری حاجی مشتاق ،ذوالفقار،حاجی دوست محمد،سید امتیاز،حاجی نقیب ،عزیز الرحمان ،سٹینڈنگ کمیٹی کے چیئرمین محمد علی اور فاروق خان جبکہ سابقہ چیئرمین فقیرحسین،اورعاطف خواجہ بھی موجود تھے ۔امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق نے مزید کہا کہ وزیر اعظم کے بلائے گئے کاشغر گوادر روٹ کے حوالے سے اجلاس میں شرکت کرونگا تاہم انہوں نے واضح کیا کہ پشاور کی تاجر برادری اور عوام میں کاشغر گوادر روٹ میں تبدیلی کی خبروں سے سخت تشویش پائی جاتی ہے اور خیبر پختونخوا کے عوام کاشغرگوادر روٹ کے نقشے کو تبدیل نہیں ہونے دینگے ۔امیرجماعت اسلامی سراج الحق نے کہا کہ نادرا نے لوگوں کے شناختی کارڈ طویل مدت سے بلاک کرکے لوگوں کو ذہنی اذیت اور کوفت میں مبتلاء کردیا ہے۔ایک ایک شناختی کارڈ کی ویری فیکیشن کیلئے تمام تر ضروری تصدیق اور دیگر معلومات فراہم کرنے کے باوجود لو گوں کے شناختی کارڈ پھر بھی بلاک رہتے ہیں جسکی وجہ سے لوگوں کے بینک اکاؤنٹ منجمد ہوجاتے ہیں انکے لئے سفر کرنا پاسپورٹ بنوانا اور دیگر کاروباری سرگرمیاں سرانجام دینا تقریبا ناممکن ہوجاتا ہے انہوں نے کہا کہ ایک ایک شناختی کارڈ کیلئے پانچ پانچ ایجنسیوں کے سامنے لوگوں کو پیش ہونا پڑتا ہے انہوں نے کہا کہ نادرا نے جماعت اسلامی کے احتجاج پر بلاک شناختی کارڈ کا مسئلہ حل کرنے کی لئے تین ماہ کی مہلت مانگی تھی جس میں سے دو ماہ گذر چکے ہیں لیکن ابھی تک نادرا کی طرف سے اس سنگین مسئلے کو سلجھانے کیلئے کوئی ٹھوس لائحہ عمل سامنے نہیں آیا انہوں نے کہا کہ ہم ایک ماہ مزید انتظار کرلیں گے لیکن اسکے بعد احتجاج کا اپنا آئینی اور جمہوری حق بھرپور طریقے سے استعمال کریں گے ،قبل ازیں آل پاکستان کمرشل ایکسپورٹرز ایسوسی ایشن KPKکے صدر سید منہاج الدین شاہ نے امیر جماعت اسلامی سراج الحق کو اپنے مسائل پیش کرتے ہوئے اپنے خطاب میں کہا کہ ہماری ایسوسی ایشن کے ممبرز جیمزسٹون ایکسپورٹ کے ذریعے ملکی ترقی میں اہم کردارادا کررہے ہیں۔ہماری ایسوسی ایشن بنے بلوچستان، اور KPKمیں ہمارے ممبرز ہیں۔ ہمارے ممبرز کی تعداد 1600کے قریب ہے۔ جو جیمزسٹونایکسپورٹ کرکے ملک کے لئے قیمتی ززمبادکہ کمار ہے ہیں۔ گزشتہ دس سالوں میں ہماری ایسوسی ایشن نے 132.05ملین ڈالرز کی ایکسپورٹ کی ہے۔ انہوں نے کہاکہ بدقسمتی سے سرکاری محکموں کے پالیسی سازادارے زمینی حقائق اور کاروباری حضرات کو اعتماد میں لئے بغیر پالیسیوں کا اجراء کرتے ہیں۔ جس کے نفاذ سے کارروباری حضرات کے لئے پیچید گیاں اور مسائل پیداہوتے ہیں۔ ان اداروں کے تمام منصوبے کا غذی ہوتے ہیں۔ اور عوام یا کاروباری طبقے کا مفاد مطع نظر نہیں ہوتا۔ یہی وجہ ہے کہ 67سال سے عوام کے مسائل اور پریشانیاں کم ہونیکی بجائے روز بروزبڑھ رہی ہیں۔ اللہ تعالیٰ نے سرزمین پاکستان پر لاتعدادا احسانات کئے ہیں۔ جن میں سے ایک جیمز سٹون کی فرادانی ہے۔ جو خیبرپختونخوا ہ اور محلقہ پہاڑی سلسلہ میں مختلف اقسام میں پائے جاتے ہیں۔ اور بیرون ملک اس کی مانگ کی وجہ سے یہ ملک کے معاشی استحکام میں ٹھوس کرداراد کرسکتاہے۔ نمکنڈی پشاور جو کہ جیمزسٹون کے کاروبار کا گھڑ ہے ۔ اور ہزاروں افرادس سے وابستہ ہیں۔ جو کہ نہایت نامساعد حالات میں نہ صرف اپنے لئے رزق حلا ل کماتے ہیں۔ بلکہ ملک کے لئے قیمتی زرمبارلہ بھی کماتے ہیں۔ لیکن ہم سے زیادہ آپ کو معلوم ہے۔ کہ صوبائی حکومت کے کسی قسم تعاون اور امداد سے محروم ہیں۔ اگرصوبائی حکومت کسی فنڈ سے ان تعلیم یا فتی کاریگروں کی جدید مشینری دید ے ۔ تو جیمزسٹون کی قدروقیمت برھنے سے ملک میں زیادہ زرمبادلہ آسکے گا۔ اور جنگ سے متاثرہ اس صوبے خاص طورپر پشاور میں بے روزگاری انہوں مطالبہ کیا کہ صوبائی حکومت کارباری کی ترقی کے لئے پشاور میں کسی مناسب مقام ترجیحاً نشترہال سے متصل ایک کثیر المنز لہ عمارت تعمیرکرے۔ جس میں سب سرکاری اور غیرسرکاری ادارے ایک ہی چھت کے نیچے ہو تاکہ کاروباری حضرات کو سہولت مل سکے۔

مصر کی نام نہاد عدالتیں اخوان المسلمون کی قیادت اور کارکنان کو جو سزائیں سنا رہی ہیں وہ انصاف ، جمہوریت اور اقوا م متحدہ کے چارٹر اور عالمی ادارہ انصاف کے طے شدہ اصولوں کے خلاف ہے ۔ اسلامیان پاکستان اخوان المسلمون کے ساتھ اظہار یکجہتی کرتے ہیں ۔ امیر جماعت اسلامی سراج الحق جب کال دیں گے اسلام آباد میں ملین مارچ ہوگا ۔ سعودی عرب کی قیادت سے کہتاہوں کہ آپ کی فطری اتحادی اسلامی تحریکیں ہیں ۔ لیاقت بلوچ

pic ji lhr

لاہور24مئی2015ء    
    سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی پاکستان لیاقت بلوچ نے کہاہے کہ مصر کی نام نہاد عدالتیں اخوان المسلمون کی قیادت اور کارکنان کو جو سزائیں سنا رہی ہیں وہ انصاف ، جمہوریت اور اقوا م متحدہ کے چارٹر اور عالمی ادارہ انصاف کے طے شدہ اصولوں کے خلاف ہے ۔ اسلامیان پاکستان اخوان المسلمون کے ساتھ اظہار یکجہتی کرتے ہیں ۔ امیر جماعت اسلامی سراج الحق جب کال دیں گے اسلام آباد میں ملین مارچ ہوگا ۔ سعودی عرب کی قیادت سے کہتاہوں کہ آپ کی فطری اتحادی اسلامی تحریکیں ہیں ۔ دنیا بھر کی سیکولر اور باطل قوتیں سعودی عرب کی مدد کو نہیں پہنچ سکتیں ۔ سعودی عرب کو عالم اسلام سے ہی مثبت پیغام پہنچاہے کہ وہ حرمین شریفین کی حفاظت کے لیے آپ کے ساتھ کھڑے ہیں ۔ عالم اسلام شاہ فیصل کے بعد شاہ سلمان سے توقع رکھتا ہے کہ وہ عالم اسلام کے مسائل کے حل کے لیے آگے بڑھ کر قیادت کریں گے ۔ سعودی عرب ،پاکستان ، ترکی اور ایران کی اسلامی تحریکیں یک زبان ہو جائیں تو مسئلہ فلسطین اور کشمیر حل ہوسکتاہے ۔ان خیالات کا ا ظہار انہو ں نے مسجد شہدا کے باہر مصر کے منتخب صدر ڈاکٹر محمد مرسی ، ڈاکٹر محمد بدیع، ڈاکٹر یوسف القرضاوی اور دیگر 100 سے زائد کارکنوں کو سزائے موت سنائے جانے کے خلاف جماعت اسلامی لاہور کے زیر اہتمام بڑے احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ مظاہرہ میں خواتین اور بچوں کی بہت بڑی تعداد بھی شریک تھی ۔ احتجاجی مظاہرے سے حافظ محمد ادریس ، نذیر احمد جنجوعہ اور امیر جماعت اسلامی لاہور میاں مقصود احمد نے بھی خطاب کیا ۔
    لیاقت بلوچ نے کہاکہ ہم پاکستانی حکومت اور دیگر مسلم حکمرانوں سے مطالبہ کرتے ہیں کہ ظلم و جبر کے خلاف خاموشی کا روزہ توڑ دیں اور جنرل سیسی کے ظالمانہ اقدامات اور مصر کی نام نہاد عدالتوں کے خلاف کھڑے ہو جائیں وگرنہ عالمی استعمار ایک ایک کر کے مسلم حکومتوں کا شیرازہ بکھیرتا رہے گا ۔انہوں نے کہاکہ ایک مختصر مدت میں مصر کی منتخب قیادت نے مصر کے لیے اسلامی جمہوری آئین بنایا لیکن اسرائیل اس کو تسلیم کرنے پر تیار نہیں تھاکہ مصر میں ایک ایسی حکومت قائم ہو جو فلسطین کی مدد اور پشتیبانی کرے ۔ امریکہ و یورپ مصر کے فوجی ڈکٹیٹر جنرل سیسی کے اقتدار پر قبضے کی لفظی بنیادوں پرتو احتجاج کرتاہے مگر مصر کے عوام کے جمہوری حق کے لیے آواز نہیں اٹھاتا ۔ انہوں نے کہاکہ جنرل سیسی نے ہزاروں مردو خواتین کا قتل عام کیا مگر عالمی ضمیر اور عالم اسلام اس پر خاموش رہے ۔ طاغوت کے پیروکار جان لیں کہ پھانسیاں اور جیلوں کی سلاخیں اسلامی تحریکوں کا راستہ نہیں روک سکتےں۔
    اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے نائب امیر جماعت اسلامی حافظ محمد ادریس نے کہاکہ ترکی کے صدر کی طرح پاکستان کے ایوان صدر اور وزیراعظم ہاﺅس سے صدر مرسی کے حق میں آواز اٹھائی جانی چاہیے مگر افسوس کہ ہمارے حکمرانوں کے کان پر جوں تک نہیں رینگی ۔ نذیر احمد جنجوعہ نے کہاکہ او آئی سی اور مسلم ممالک کی حکومتیں گونگی بہری ہیں جو عالم اسلام پر ہونے والے مظالم کے خلاف آواز نہیں اٹھاتیں ۔
    احتجاجی مظاہرہ سے خطاب کرتے ہوئے امیر جماعت اسلامی لاہور میاں مقصود احمد نے کہاکہ ڈاکٹر مرسی کی سزائے موت کے خلاف پاکستانی قوم میں سخت غم و غصہ اور تشویش پائی جاتی ہے اگر اسلام آباد میں احتجاجی مظاہرے کے لیے امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے کال دی تو ہم لاہور کے گلی کوچوں سے لاکھوں لوگوں کو اسلام آباد لے کر جائیں گے ۔ انہوں نے کہاکہ اللہ تعالیٰ نے ظالم کی رسی ڈھیلی چھوڑ رکھی ہے لیکن جب اللہ تعالیٰ کی پکڑ آئی تو نہ جنرل سیسی رہے گا اور نہ اس کے امریکی و اسرائیلی سرپرست رہیں گے ۔ عالم اسلام کو اب اس ظلم و جبر کے خلاف اٹھ کھڑے ہوناچاہیے ۔

The plight of the man in the street could not be improved without ousting the forces of the status quo from power.Siraj

20150523_133549

Peshawar, May 23: Ameer, Jamaat e Islami, Pakistan, Senator Sirajul Haq, has said that the plight of the

man in the street could not be improved without ousting the forces of the status quo from power. He was talking to different delegations at Al-Markaz Islami, Peshawar on Saturday.

Sirajul Haq said that the corrupt elite were holding all state institutions as also the country’s resources as hostages which had made the masses’ life miserable. Thousands of workers had been rendered jobless because of load shedding of electricity and gas but the rulers remained totally unconcerned.

The JI chief said that the parties ruling the country for decades had simply prolonged their rule and paid little attention to the problems of the people. The ruling elite had amassed heaps of wealth for their coming generations without caring for their voters.  While the world had reached the moon, Pakistan, despite having vast resources, was still groping in the dark due to energy crisis and low literacy rate.

Sirajul Haq said the JI was fighting for the rights of the common man and the masses should stand by the Jamaat in this struggle, and ensure the success of the JI candidates in the Local Bodies elections. He said that scores of the JI candidates had already been declared victorious unopposed.

اسٹیٹس کو کی حامی قوتوں کو دیس نکالا دیئے بغیر عام آدمی کو اس کے غصب شدہ حقوق نہیں مل سکتے ۔اشرافیہ ہرصورت اقتدارپر قابض رہنا چاہتا ہے ،تمام وسائل اور اداروں کو کرپٹ اشرافیہ نے یرغمال بنا رکھا ہے جس سے عام آدمی کی زندگی اجیرن ہوگئی ہے ۔بجلی کی بدترین لوڈ شیڈنگ نے عوام کو بے حال کررکھا ہے ،کاروبار زندگی معطل ہے ،صنعتیں اور کارخانے بند پڑے ہیں جس سے لاکھوں مزدور بے روز گار ہوچکے۔ سینیٹر سراج الحق

sirajulhaq 23 2nd

لاہور23مئی 2015ء   
    امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ اسٹیٹس کو کی حامی قوتوں کو دیس نکالا دیئے بغیر عام آدمی کو اس کے غصب شدہ حقوق نہیں مل سکتے ۔اشرافیہ ہرصورت اقتدارپر قابض رہنا چاہتا ہے ،تمام وسائل اور اداروں کو کرپٹ اشرافیہ نے یرغمال بنا رکھا ہے جس سے عام آدمی کی زندگی اجیرن ہوگئی ہے ۔بجلی کی بدترین لوڈ شیڈنگ نے عوام کو بے حال کررکھا ہے ،کاروبار زندگی معطل ہے ،صنعتیں اور کارخانے بند پڑے ہیں جس سے لاکھوں مزدور بے روز گار ہوچکے ہیں لیکن حکمرانوں کے کانوں پر جوں نہیں رینگ رہی۔جماعت اسلامی عام آدمی کے حقوق کی جنگ لڑ رہی ہے عوام اپنے حقوق کے تحفظ کیلئے جماعت اسلامی کے کندھے کے ساتھ کندھا ملاکر کھڑے ہوجائیںاوربلدیاتی انتخابات میں جماعت اسلامی کے دیانتدار امیدواروں کو کامیاب کروائیں ۔بلدیاتی انتخابات اسلامی اور خوشحال پاکستان کی پہلی منزل ثابت ہونگے ،عوام نے جماعت اسلامی پر اعتماد کیا تو ہم پاکستان کو اسلامی و فلاحی ریاست اور کلین گرین پاکستان بنانے کا عہد پورا کریں گے۔ ملک میں آئین کی بالادستی اور میرٹ کی حکمرانی کے بغیر ظلم و جبر کا خاتمہ نہیں ہوگا۔68سال سے اقتدار کی باریاں لگانے والوں نے عوام کااستحصا ل اور ملک کو کنگال کیا۔پاکستان کو مسائل کی دلدل میں دھکیلنے والوں سے نجات حاصل کئے بغیر چین سے نہیں بیٹھیں گے ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے مرکز اسلامی پشاور میں مختلف وفود سے ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔
    سراج الحق نے کہا کہ پاکستان کو اللہ تعالیٰ نے بے پناہ وسائل سے نواز ا ہے مگر وسائل کی غیر منصفانہ تقسیم سے ملک میں غربت ،مہنگائی ،بے روز گاری اور بدامنی نے ڈیر ے ڈال رکھے ہیں ۔غریبوں کا مسلسل استحصال ہورہا ہے ،انہیں زندگی گزارنے کی کوئی سہولت دستیاب نہیں اور تمام تر وسائل اور سہولیات پر جاگیرداروں اورسرمایہ داروں نے قبضہ کررکھا ہے ۔ بھوک اور غربت کی وجہ سے لوگ خود کشیوں پر مجبور ہیں مگر ظالم سرکار نہ انہیں زندہ رہنے کا حق دیتی ہے اور نہ عزت سے مرنے کا موقع ملتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ ملک بھر میں پھولوں جیسے معصوم بچے محنت مزدوری پر مجبور ہیں ۔پڑھے لکھے اور اعلیٰ تعلیم یافتہ نوجوان ہاتھوں میں ڈگریاں پکڑے مارے مارے پھر رہے ہیں مگر انہیں نوکری نہیں ملتی جبکہ اشرافیہ کے نااہل اور بدقماش شہزادوں کو اعلیٰ سرکاری عہدوں پر تعینات کرکے میرٹ اور قانون کا مذاق اڑایا جاتا ہے ۔
    سینیٹرسراج الحق نے کہا کہ ملکی اقتدار پر قابض رہنے والی پارٹیوں نے ملک میں آئین و قانون کی حکمرانی قائم کرنے کے بجائے اپنی بادشاہت کو طول دیا ،حکمرانوں نے ملکی وسائل کی بندر بانٹ اور قومی خزانے کی لوٹ مار سے اپنی کئی کئی نسلیں سنوار لیں جبکہ عام آدمی کی آنے والی نسلوں کو غربت ،جہالت ،بھوک اور ننگ کے حوالے کردیا گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ عوام اپنا ووٹ کا رویہ بدلیں اور بار بار ڈسنے والوں کو اقتدار کے ایوانوں سے نکال باہر کریں ۔انہوں نے کہا کہ دنیا چاند سے آگے مریخ کی جانب محو سفر ہے جبکہ نااہل حکمرانوں کی وجہ سے پاکستان اندھیروں کے چنگل میں پھنسا ہوا ہے ۔سراج الحق نے کہا کہ خیبر پختونخواہ کے بلدیاتی انتخابات میں جماعت اسلامی کے بیسیوں امیدوار اب تک بلا مقابلہ منتخب ہوچکے ہیں ،اگر عوام نے ہم پر اعتماد کرتے ہوئے ہمیں خدمت کا موقع دیا تو ہم پاکستان کو حقیقی معنوں میں ایک اسلامی و فلاحی مملکت بنا ئیں گے جہاں کسی غریب کا استحصال نہیں ہوگا اور عام آدمی کو بھی زندگی گزارنے کی وہی سہولتیں ملیں گی جن سے آج اشرافیہ لطف اندوز ہورہا ہے ۔انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی قومی خزانے کے منہ عام آدمی کی فلاح و بہبود اور ترقی کیلئے کھول دے گی اور پاکستان کو کلین اور گرین پاکستان بنائے گی جو عالم اسلام کی قیادت کرے گا اور ہم دنیا میں اپنے کھوئے ہوئے عزت و وقار کو بھی دوبارہ حاصل کریں گے ۔ 

مٹھی بھر اشرافیہ کی لوٹ کھسوٹ کرپشن کی وجہ سے عوام کی زندگی اجیرن ہے وسائل سے مالامال ملک کے عوام ہمارے حکمرانوں اور مٹھی بھر اشرافیہ کی کرپشن کی وجہ سے بدحال ہوچکے ہیں ۔مشتاق احمد خان

IMG_0131

نائب امیر جماعت اسلامی خیبرپختونخوا مشتاق احمد خان نے کہا ہے کہ 30اپریل کو لٹیروں اور ظالموں کا تاریخی احتساب ہوگا ،مٹھی بھر اشرافیہ کی لوٹ کھسوٹ کرپشن کی وجہ سے عوام کی زندگی اجیرن ہے وسائل سے مالامال ملک کے عوام ہمارے حکمرانوں اور مٹھی بھر اشرافیہ کی کرپشن کی وجہ سے بدحال ہوچکے ہیں ،سراج الحق کی قیادت میں اسلامی پاکستان خوشحال پاکستان ہی عوام کے مسائل کا حل ہے ان خیالات کا اظہار انہوں سپین خاک اور وزیر گڑھی میں انتخابی جلسوں سے خطاب کرتے ہوئے کیا اس موقع پر حزب المجاہدین کے صوبائی امیر مولانا سید تاج علی شاہ ،امیر جماعت اسلامی ضلع نوشہرہ مولانا سمیع الرحمان یوسفی،اور دیگر نے بھی خطاب کیا مشتاق احمد خان نے کہا کہ جماعت اسلامی سے ہی ملک وقوم کا مستقبل وابستہ ہے اور جماعت اسلامی ہی اس ملک اور قوم کو کرپٹ حکمرانوں سے نجات دلائیگی، جماعت اسلامی برسر اقتدار آکر حقیقی معنوں میں عوامی راج قائم کریگی جماعت اسلامی کا ایجنڈا غریبوں کا ایجنڈا ہے انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی ملک میں یکساں نظام تعلیم نافذ کریگی اور صدر مملکت اور وزیر اعظم کے بچے جس سکول کالج اور جس نصاب کے تحت تعلیم حاصل کریں گے اسی سکول اور کا لج میں غریب اور مزدور کے بچے بھی تعلیم حاصل کریں گے انہوں نے کہا کہ میں ظلم اور جبر کی زنجیروں کو توڑنے کیلئے نکلا ہوں انہوں نے کہا کہ عوام ووٹ کے زرئعے بھی بڑی تبدیلی لاسکتے ہیں،انہوں نے کہا کہ بلدیاتی انتخابات انتہائی اہمیت کے حامل ہیں اور عوام بلدیاتی انتخابات میں جماعت اسلامی کے امیدواروں کو ووٹ دیں اور ایک نئے اسلامی اور خوشحال پاکستان کیلئے ان بلدیاتی انتخابات کو ایک سیڑھی ثابت کردیں انہوں نے کہا کہ اگرعوام جماعت اسلامی کے امیدواروں کو بلدیاتی انتخابات میں اختیار دیا تو ہم انشاء اللہ خیبر پختونخوا کو ایک دوسرے استنبول بناکر دکھائینگے

محمد مرسی سرزمین مصر پر آزادی، جمہوریت کی علامت اور مصری عوام کی آواز اور اسلامی انقلاب کے رہنما ہیں۔ وہ اُس طویل اور عظیم جدوجہد کا حصہ ہیں جو دنیا بھر کی اسلامی تحریکوں کے ذریعے عرصة دراز سے جاری و ساری ہے۔ فرعون کے ظلم اور جبر و استبداد کے خلاف موسیٰ علیہ السلام اور جنرل سیسی کے خلاف محمد مرسی تک یہ ایک مسلسل جدوجہد ہے۔ امیر جماعتِ اسلامی پاکستان سراج الحق

sirajulhaq 22 may

لاہور22مئی 2015ء    
    امیر جماعتِ اسلامی پاکستان سراج الحق نے کہا ہے کہ محمد مرسی سرزمین مصر پر آزادی، جمہوریت کی علامت اور مصری عوام کی آواز اور اسلامی انقلاب کے رہنما ہیں۔ وہ اُس طویل اور عظیم جدوجہد کا حصہ ہیں جو دنیا بھر کی اسلامی تحریکوں کے ذریعے عرصة دراز سے جاری و ساری ہے۔ فرعون کے ظلم اور جبر و استبداد کے خلاف موسیٰ علیہ السلام اور جنرل سیسی کے خلاف محمد مرسی تک یہ ایک مسلسل جدوجہد ہے۔ جماعت اسلامی کے مرکزی میڈیا سیل کے پریس ریلیز کے مطابق ان خیالات کا اظہار انہوں نے آج اسلام آباد (آبپارہ چوک) میں صدر محمد مرسی کی ظالمانہ اور غیر منصفانہ پھانسی کی سزا کے خلاف نکالی گئی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔
    سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ محمد مرسی کا جرم یہ ہے کہ جیسے ہی وہ صدر منتخب ہوئے انہوں نے امریکہ کی بجائے مدینہ منورہ اور مکہ معظمہ جاکر غلافِ کعبہ پکڑ کر رو رو کر دعا مانگی کے اے اللہ! مصری میں اللہ اور اُس کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم کی حکومت قائم کرنے کی توفیق عطا فرما۔ انہوں نے مصری عوام کو ایک ٹارگٹ اور نصب العین دیا۔ انہوں نے یہودیوں کا ساتھ دینے اور اسرائیل کا ایجنٹ بننے کی بجائے فلسطینیوں اور حماس کا ساتھ دیا۔ بنیادی سہولت سے محروم غریب مصری عوام کا ساتھ دیا۔ انہوں نے کہا کہ مرسی کا ایک قصور یہ ہے کہ انہوں نے غزہ کے مظلوم فلسطینیوں، محصورین کے لیے غزہ سے ملحقہ مصری بارڈر کھول دیا۔ فلسطینیوں کی حمایت کا اعلان کرکے ان کی جدوجہد کو منزل تک لے جانے کا اعلان کیا۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ نے بھی محمد مرسی کی منتخب حکومت کے خلاف سازش کی اور مغربی آمریتوں نے بھی اس ڈر سے ان کے خلاف سازش کی کہیں اسلامی دنیا میں شخصی حکومتوں کا خاتمہ نہ ہوجائے۔
    سراج الحق نے کہا کہ ہم نے گزشتہ سال مینار پاکستان پر 23 اسلامی ممالک کے نمائندوں کو مدعو کیا، جن میں مصر، شام، لیبیا ، سوڈان، الجزائر اور دیگر اسلامی ممالک کے نمائندے شامل تھے۔ ہم نے اس موقع پر مشورہ کیا کہ عالم اسلام میں اسلامی انقلاب کا راستہ کیا ہونا چاہیے۔ ہم نے فیصلہ کیا کہ اسلامی انقلاب کے لیے جمہوریت کا راستہ، ووٹ کا راستہ اختیار کیا جائے گا۔ لیکن افسوس کہ الجزائر کے انتخابات میں عباس مدنی کی فتح کو بھی تسلیم نہیں کیا گیا۔ اب جب طویل عرصہ سے آمریت کے بعد محمد مرسی پر لوگوں نے اعتماد کیا تو ان کی حکومت کو ایک سال بھی چلنے نہیں دیا گیا۔ یہ مغرب کا منافقانہ رویہ اور فراڈ ہے۔ امریکہ اور اس کے حواری کبھی بھی مسلمان ممالک میں جمہوریت پسند نہیں کرتے۔ انہوں نے کہا کہ اسلامی تحریکوں کا راستہ ساری دنیا میں جمہوریت کا راستہ ہے۔ہم ہرجگہ بییلٹ بکس کے ذریعے اختیارات اور حکومت تک پہنچنا چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اسی لیے آج مصر میں چالیس ہزار سے زیادہ ورکرز جیلوں میں ڈالے گئے۔ ان میں ڈاکٹرز، انجینئرز اور دیگر اعلیٰ تعلیم یافتہ افراد شامل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جیل اور پھانسیاں انقلابیوں کے راستے میں رکاوٹ نہیں بن سکتے۔ استعمار جتنا ظلم کرتا ہے اتنا ہی محمد مرسی کی حمایت میں اضافہ ہوتا ہے۔ سراج الحق نے کہا کہ ہم مصری عدالت کے فیصلوں کو مسترد کرتے ہیں۔ دنیا بھر کے انسانی حقوق کی تنظیموں سے اپیل کرتا ہوں کہ وہ اس ظالمانہ سزا کے خلاف آواز بلند کریں۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے ساتھ ایک نظام ہے، آمرانہ ہتھکنڈے ہمارا راستہ نہیں روک سکتے۔ یہ انقلاب افغانستان میں بھی آئے گا، یہ پاکستان میں بھی آنے والا ہے، کوئی اسے روک نہیں سکتا۔ سراج الحق نے آج سعودی عرب کی مسجد میںہونے والے بم دھماکے کی شدید ترین الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا کہ ہم سعودیہ کیساتھ ہیں۔ ہمارے دل سعودی عرب کی عوام کے ساتھ دھڑکتے ہیں۔ سعودی عرب ہمارا برادر پڑوسی ملک ہے۔ 35 ہزار سے زائد پاکستانی سعودی عرب میں ملازمت کرتے ہیں۔ ہم سعودی عرب کی عزت اپنی عزت سمجھتے ہیں۔ اس لیے عالم اسلام کو ایک ہونے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے حکمرانوں کو بھی خبردار کرتے ہوئے کہا کہ وہ واشنگٹن کی بجائے اپنے کعبہ (بیت اللہ شریف) کا طواف کریں۔ مسلمان حکمران ایک معاشی منڈی، ایک کرنسی اپنائیں۔

جماعت اسلامی کے مرکزی امیر سراج الحق نے دورہ افغانستان کی دعوت قبول کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان اور افغانستان کے درمیان عوامی سطح پر رابطے استوار کرنے چاہییں اور ہمیں وہاں کسی ایک دھڑے کی بجائے افغان عوام کے مفاد کو دیکھنا ہوگا۔جماعت اسلامی پاکستان کا اعلیٰ سطحی وفد ان کی قیادت میں جون کے وسط میں افغانستان کا دورہ کرے گا۔امیرجماعت اسلامی سراج الحق کی پشاور میں پریس کانفرنس

siraj 21 3 copy

جماعت اسلامی کے مرکزی امیر سراج الحق نے دورہ افغانستان کی دعوت قبول کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان اور افغانستان کے درمیان عوامی سطح پر رابطے استوار کرنے چاہییں اور ہمیں وہاں کسی ایک دھڑے کی بجائے افغان عوام کے مفاد کو دیکھنا ہوگا۔اگر خیبر پختونخوا میں جاری لوڈ شیڈنک فوری حل نہ کالا گیا تو عوام کے صبر کا پیمانہ لبریز ہوچکا ہے پھر ان کو قابو نہیں کیا جا سکے گا۔سیاسی لیڈروں کو بلدیاتی انتخابات کی مہم سے روکنے کے الیکشن کمیشن کے فیصلے کو سپریم کورٹ میں چیلنج کریں گے۔وہ المرکز اسلامی پشاورمیں پریس کانفرنس سے خطاب کر رہے تھے۔انھوں کہا کہجماعت اسلامی پاکستان کا اعلیٰ سطحی وفد ان کی قیادت میں جون کے وسط میں افغانستان کا دورہ کرے گا۔انہیں اس دورے کی دعوت افغان صدر اشرف غنی نے دی ہے ۔ خطے میں قیام امن کیلئے ضروری ہے کہ دونوں ممالک برادرانہ تعلقات کو وسعت دیں اور ایک دوسرے کے دست و بازو بنیں ۔افغانستان سے امریکی انخلاء اور نیٹو فوجوں کی واپسی کے بعد خطے میں امن کے قیام کی راہ میں حائل مشکلات قریبا ختم ہوچکی ہیں ۔پاک افغان تعلقات کسی ایک گروپ، پارٹی یا حکومتی سطح پر نہیں بلکہ عوام کی سطح پر ہونے چاہئیں اور دونوں ممالک کے عوام کو ایک دوسرے کے ساتھ رابطوں کو مضبوط کرنا چاہئے ۔ مضبوط اور مستحکم افغانستان پاکستان کے مفادمیں ہے ۔
سینیٹر سرا جالحق نے کہاکہ پاکستان اورافغانستان کے تعلقات میں جب بھی کوئی کمی آئی اس کا فائدہ ہمیشہ بھارت نے اٹھایا ہے۔ بھارت نے افغانستان میں بیٹھ کر پاکستان کو غیر مستحکم کرنے کی کوشش کی ہے ۔انہوں نے کہا کہ گزشتہ کئی برس سے چالیس لاکھ کے قریب افغان مہاجرین پاکستان میں آباد ہیں ان کے بزرگوں کی قبریں پاکستان میں ہیں اور ان کی ایک نسل یہاں پل بڑھ کر جوان ہوئی ہے ،وہ ہمارے بہترین سفیر ہیں ۔حکومت افغان مہاجرین کے ساتھ مہمانوں جیسا برتاؤکرے اور انہیں بلاوجہ تنگ کرنے کے واقعات کو سختی کے ساتھ روکا جائے ۔ سینیٹر سراج الحق نے بتایا کہ جماعت اسلامی خیبر پختونخواہ کا دورکنی وفد پہلے بھی افغانستان کا دورہ کر چکاہے۔
سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ اگر یورپ اور مغرب اپنے مفادات کیلئے ایک ہوسکتے ہیں تو عالم اسلام مشترکہ منڈی اور مشترکہ کرنسی پر کیوں متفق نہیں ہوسکتا ۔انہوں نے کہا کہ مسلمانوں کو تو اللہ تعالیٰ نے وحدت اور بھائی چارے کا حکم دیا ہے ۔ عالم اسلام کو اللہ تعالی ٰ نے بے پناہ وسائل سے مالامال کررکھا ہے ،امت کی بہتری اور سربلندی کیلئے ضروری ہے کہ مسلم ممالک کے حکمران سر جوڑ کر بیٹھیں اور عالم اسلام کو مسائل کی دلدل سے نکالنے کیلئے مشترکہ حکمت عملی اختیار کریں ۔ امریکی انخلاء کے بعد خطے کا منظر نامہ تبدیل ہوچکا ہے ۔ اب خطے کی صورتحال کا تقاضا ہے کہ پاک افغان تعلقات کو فروغ دیا جائے اور دونوں برادر اسلامی ممالک ایک دوسرے کیلئے امن ،محبت اور اخوت کے پیغام کو آگے بڑھائیں ۔انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی کا وفد افغانسان کی تمام سیاسی جماعتوں کی قیادت سے ملاقات کرے گا۔انہوں نے کہا کہ دونوں ممالک کے وفود کو ایک دوسرے کے ہاں آناجانا چاہئے تاکہ تعلقات میں مزید بہتری آئے ۔ہم افغانستان میں کسی ایک گروپ یا حکومت سے نہیں بلکہ عوام کے ساتھ تعلقات کو مثالی بنانا چاہتے ہیں ۔
سراج الحق نے کہا کہ خیبر پختونخواہ کیلئے یہ بڑے اعزاز کی بات ہے کہ ملک بھر میں سب سے پہلے بلدیاتی انتخابات یہاں منعقد ہورہے ہیں ۔بلدیاتی انتخابات سے گلی کوچوں سے نئی سیاسی قیادت سامنے آئے گی جو اپنے علاقے کے مسائل حل کرے گی ۔انہوں نے کہا کہ یہ پہلے بلدیاتی انتخابات ہیں جو جماعتی بنیادوں پر ہورہے ہیں اس سے ملک میں سیاسی کلچر مضبو ط ہوگا۔سراج الحق نے کہا کہ خیبر پختونخواہ بجلی پیدا کرنے والا صوبہ ہے مگر اس صوبے کو لوڈ شیڈنگ کا عذاب سب سے زیادہ جھیلنا پڑتا ہے ۔لوڈ شیڈنگ کا مسئلہ انتہائی پیچیدہ اور گھمبیر شکل اختیار کرچکا ہے ۔مرکزی حکومت نے وعدہ کیا تھا کہ وہ چھ ماہ میں بجلی کا مسئلہ حل کردے گی مگر دوسال میں لوڈ شیڈنگ میں کمی کی بجائے اضافہ ہوا ہے۔انہوں نے کہا کہ خیبر پختونخواہ کا وسائل میں سب سے کم اور لوڈ شیڈنگ میں سب سے زیادہ حصہ ہے ۔ہم حکومت کو خبر دار کرتے ہیں کہ لوڈشیڈنگ کا مسئلہ فوری اور ہنگامی بنیادوں پر حل کیا جائے ۔
الیکشن کمیشن کی طرف سے جاری ہونے والے ایک نوٹس کے بارے میں سوال کے جواب میں سراج الحق نے کہا کہ جماعت اسلامی انتخابی ضابطہ اخلاق کی دل وجان سے پابندی کرتی ہے ۔ہم ضابطہ اخلاق کو انتہائی اہمیت دیتے ہیں ۔ہم30 مئی کے بعد عدالت سے رجوع کریں گے تاکہ اپنی پوزیشن واضح کر سکیں ۔انہوں نے کہا کہ انتخابات اورسیاسی عمل سے سیاسی قیادت کو الگ رکھنا سمجھ سے بالاتر ہے ،انہوں نے کہا کہ اگر کوئی امیدوار میری جماعت کے ٹکٹ اور نشان پر الیکشن لڑتا ہے تو مجھے اپنے امیدوار کے حق میں عوام سے رابطہ کرنے کی اجاز ت ملنی چاہئے ،البتہ کسی وزیر مشیر کو اپنے سرکاری اسٹیٹس اور وسائل کو خرچ کرنے کی اجازت نہیں ہونی چاہئے ۔

خیبر پختونخوا سمیت ملک کا سب سے بڑا مسئلہ لوڈشیڈنگ بن چکاہے جس کی وجہ سے صنعتیں اور کارخانے بند ہیں ۔ لاکھوں مزدور بے روزگار ہوچکے ہیں اور ان کی زندگی اجیرن ہوچکی ہے ۔ خواتین 30 مئی کو بڑی تعداد میں گھروں سے نکلیں اور ترازو پر مہر لگاکر اپنا حق رائے دہی استعمال کریں ۔ امیرجماعت اسلامی سینیٹرسراج الحق کا نوشہرہ میں جلسہ عام سے خطاب

20150520_184809 
لاہور20 مئی2015ء
امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہاہے کہ اسلام آباد صوبوں کے حقوق غصب کررہاہے ۔ وزیراعظم خود کو پنجاب تک محدود نہ کریں ، وہ پورے ملک کے وزیراعظم ہیں ۔ حکمرانوں کے متعصبانہ رویے سے چھوٹے صوبوں میں احساس محرومی بڑھ رہاہے اور عوام مایوسی کا شکار ہو رہے ہیں ۔ حکمرانوں کو تعصب اور نفرت کی عینک اتار کر تمام صوبوں کو برابر کے حقوق دینا ہوں گے ۔ اسلا م آباد والے قومی خزانے پر سانپ بنے بیٹھے ہیں ۔خیبر پختونخوا سمیت ملک کا سب سے بڑا مسئلہ لوڈشیڈنگ بن چکاہے جس کی وجہ سے صنعتیں اور کارخانے بند ہیں ۔ لاکھوں مزدور بے روزگار ہوچکے ہیں اور ان کی زندگی اجیرن ہوچکی ہے ۔ خواتین 30 مئی کو بڑی تعداد میں گھروں سے نکلیں اور ترازو پر مہر لگاکر اپنا حق رائے دہی استعمال کریں ۔ جماعت اسلامی کے مرکزی میڈیا سیل کے پریس ریلیز کے مطابق ان خیالات کا اظہار انہوں نے نوشہرہ میں بڑے جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ جلسہ سے امیر جماعت اسلامی کے پی کے پروفیسر محمد ابراہیم خان ، شبیر احمد خان ، حاجی نورالاسلام ، آصف لقمان قاضی اور معراج الدین خان نے بھی خطاب کیا ۔ 
سینیٹرسراج الحق نے کہاکہ بجٹ شوکت عزیر بنائیں یا اسحق ڈار ، اس میں غریبوں کے لیے کچھ نہیں ہوتا ۔ سرمایہ داروں اور جاگیرداروں کی تمام پالیسیاں اشرافیہ اور امیروں کو فائدہ پہنچانے تک محدود ہوتی ہیں ۔ آئی ایم ایف سے ملنے والے قرضوں کا عوام کوکو ئی فائدہ نہیں پہنچتا ۔ یہ قرضے حکمرانوں کے پیٹ میں جاتے ہیں اور مقروض عام پاکستانی ہوتاہے ۔ انہوں نے کہاکہ جماعت اسلامی اقتدار میں آکر سودی نظام کو ختم کر دے گی اور ملک کو ایسا عادلانہ معاشی نظام دے گی۔خواتین ، مزدوروں اور کسانوں کو بلاسود قرضے دیے جائیں گے اور 30 ہزار سے کم آمدنی والے خاندانوں کو پانچ بنیادی اشیائے صرف پر سبسڈی دی جائے گی۔ جس میں کسی غریب کا استحصال نہ ہو اور دولت چند ہاتھوں میں مرتکز نہ رہے ۔ انہوں نے کہاکہ ملک میں غربت ، جہالت ، مہنگائی ، بے روزگاری اور بدامنی کے ذمہ دار وہ حکمران ہیں جنہوں نے تمام وسائل پر قبضہ کررکھاہے ۔ انہوں نے کہاکہ آج تک ملک پر سرمایہ داریا جاگیردار ہی اقتدار میں رہے ہیں ایک دن کے لیے بھی اقتدار ان لوگوں کو نہیں مل سکا جو اسلام کے نام لیوا ہیں ۔
سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ ملک میں استحصالی نظام کی وجہ سے عوام کے اندر حکمرانوں کے خلاف نفرت بڑھ رہی ہے ۔ طبقاتی نظام تعلیم سے امیر اور غریب کے درمیان خلیج بڑھ رہی ہے ۔ امیروں کے بیٹے حکمران بنتے ہیں اور غریبوں کے بچے زندگی کی ایک ایک سہولت کو ترستے رہتے ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ موجودہ طبقاتی اور استحصالی نظام نے تانگے، ریڑھی، چھابڑی اور رکشہ والوں کے لیے زندگی کو ایک بھیانک خواب بنادیا ہے ۔ معصوم بچے محنت مزدوری پر مجبور ہیں ۔ غریب سارا دن محنت مشقت کرنے کے بعد بھی مسائل سے دوچار رہتے ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ اس ظالمانہ استحصالی نظام کے خاتمہ کے لیے عوام جماعت اسلامی کے دست و بازو بنیں ۔ انہوں نے کہاکہ اقتدار پر قابض چند سیاسی خاندانوں نے انتہائی مکاری اور عیاری سے عوام کو تقسیم کیاہے ۔عوام ان کے لیے نعرے لگاتے ہیں ووٹ دیتے ہیں اور انہیں کندھوں پر بٹھاتے ہیں مگر یہ ظالم اقتدار کے ایوانوں میں پہنچ کر ایک دوسرے کے مفادات کے محافظ بن جاتے ہیں اور ایک دوسرے کی کرپشن کو تحفظ دیتے ہیں لیکن عوام کی بدحالی دور کرنے کے لیے وہ کچھ نہیں کرتے۔