موجودہ جمہوریت کی آڑ میں عام آدمی کا استحصال کیا گیا ہے ،پاکستان میں بڑے انقلاب کی ضرورت ہے جو ظلم و جبر پر مبنی اس طبقاتی اور استحصالی نظام کو دفن کر کے عام آدمی کو وی آئی پیزکے برابر لاکھڑا کرے ۔باری باری اقتدار میں آنے والوں نے ہمیشہ ملک و قوم کو لوٹا،عوام کو گمراہ کیااور اقتدار کے ایوانوں میںجاکرانہی لوگوں کا استحصال کرتے رہے جن کے ووٹوں سے وہ اقتدار تک پہنچے تھے ۔جماعت اسلامی عام آدمی کی لڑائی لڑ رہی ہے۔سینیٹر سراج الحق کا لاہور میں جماعت اسلامی حلقہ خواتین کے ورکرزکنونشن سے خطاب

pic ameer jip.jp16

لاہور16مئی2015ء
     امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ موجودہ جمہوریت کی آڑ میں عام آدمی کا استحصال کیا گیا ہے ،پاکستان میں بڑے انقلاب کی ضرورت ہے جو ظلم و جبر پر مبنی اس طبقاتی اور استحصالی نظام کو دفن کر کے عام آدمی کو وی آئی پیزکے برابر لاکھڑا کرے ۔باری باری اقتدار میں آنے والوں نے ہمیشہ ملک و قوم کو لوٹا،عوام کو گمراہ کیااور اقتدار کے ایوانوں میںجاکرانہی لوگوں کا استحصال کرتے رہے جن کے ووٹوں سے وہ اقتدار تک پہنچے تھے ۔جماعت اسلامی عام آدمی کی لڑائی لڑ رہی ہے ،ہمیں کرسی ¿ اقتدار کی نہیں اللہ کے سامنے جواب دہی کی فکر ہے ۔ہم عوام پر ہونے والے ظلم و ستم کا خاتمہ کرکے اللہ کے سامنے سرخرو ہو نا چاہتے ہیں ۔عوام ساتھ دیں تو آئندہ انتخابات ہی میں کرپٹ،لٹیروں ،آئی ایم ایف اور ورلڈ بنک کے ایجنٹوںاور استحصالی طبقے کا بوریا بستر گول کرسکتے ہیں ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے منصورہ میں حلقہ خواتین لاہور کے زیر انتظام ہونے والے خواتین ورکرزکنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی پنجاب نذیر احمد جنجوعہ اور امیر جماعت اسلامی لاہور میاں مقصود احمد بھی موجود تھے ۔
    سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ جس سیاست کے نتیجہ میں غربت ،جہالت ،مہنگائی ،بے روز گاری اور بدامنی بڑھتی ہووہ انسانی نہیں شیطانی سیاست ہے ،ایسی سیاست کے نتیجے میں امریکی ایجنٹ قوم کی گردنوں پر سوار ہوتے ہیں جو قومی دولت لوٹ کر یورپی و مغربی بنکوں میں جمع کراتے ہیں اور آئی ایم ایف اور ورلڈ بنک سے کمیشن کے عوض قرضے لیکر آنے والی نسلوں کو مقروض کرتے ہیں انہوں نے کہا کہ ان قرضوں کی آڑ میںہماری آزادی و خود مختاری کو دشمن کے ہاتھوں گروی رکھا گیا ہے ،ہماری تمام پالیسیاں امریکہ کی مرضی سے بنتی ہیں ،معیشت کی ترقی کے دعوے داروں نے بیرونی قرضوں پر انحصار کرکے قوم کو خود انحصاری کی منزل سے دورکر رکھاہے ۔انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی کی سیاست کا مرکز و محور ملک میں عادلانہ نظام اور میرٹ کی بالادستی ہے ،انہوں نے کہا کہ غریب اور عام آدمی کا مسلسل استحصال ہورہا ہے ،غریب کیلئے تعلیم ،صحت اور روز گار کے مواقع ہیں نہ عدالتوں سے اسے انصاف ملتا ہے ،انہوںنے کہا کہ عدالتوں سے انصاف ملتا نہیں خریدا جاتا ہے اور انصاف وہی خرید سکتا ہے جس کے پاس لاکھوں اور کروڑوں روپے ہوں،یہی وجہ ہے کہ غریب آدمی ساری زندگی عدالتوں کے چکر لگاتا رہتا ہے ۔ملک میں نظام شریعت کے نفاذ سے ہمارے تمام مسائل خود بخود حل ہوسکتے ہیں ،ہم چاہتے ہیں کہ ملک میں قرآن و سنت کا نظام ہو جس میں کسی امیر کو غریب کے حقوق غصب کرنے کی جرا ¿ ت نہ ہو،انہوں نے کہا کہ ہم چیف جسٹس کے ہاتھ میں قرآن دیکھنا چاہتے ہیں ،جب قرآن کے مطابق فیصلے ہونگے تو کوئی کسی پر ظلم نہیں کرسکے گا۔
    سراج الحق نے کہا کہ لارڈ میکالے کے نظام تعلیم نے عوام کو شودر اور اشرافیہ کوبرہمن اور پنڈت بنایا ہے ۔ لاہور میں آج بھی ہزاروں لوگ فٹ پاتھوں پر سونے پر مجبور ہیں اور یہاں کے پھولوں جیسے بچے سکول جانے کی بجائے ہوٹلوں میں گندے برتن دھونے ،ورکشاپوں میں کام کرنے اورسائیکلوں کی دکانوں پر پنکچر لگانے پر مجبور ہیں ۔انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی عوامی قوت سے اس ظالمانہ نظام کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنے کیلئے تیار ہے ،عوام نے جماعت اسلامی کو موقع دیا تو ان لٹیروں سے قومی دولت کی ایک ایک پائی کا حساب لیں گے اور بیرونی بنکوں میں پڑی ہوئی قومی دولت کو واپس لا کر غریبوں پر خرچ کریں گے ۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s