ملک میں 68سال سے غریبوں کے ساتھ شودروں جیسا سلوک ہو رہا ہے ٗ سیاسی پارٹیاں برہمنوں کے ٹولے بن چکی ہیں ٗ ملک کا عدالتی نظام بوسیدہ ہے جہاں پر انصاف بکتا ہے ٗ اعلی مناصب اور عہدوں پر ایک خاص طبقہ قابض ہے ٗ دنیا چاند پر پہنچ چکی ہے اور ہمارے بچے آج بھی گندگی کے ڈھیر میں رزق تلاش کر رہے ہیں ٗ کراچی میں 24ہزار لوگ شہید ہوئے آج تک کوئی نہیں پکڑا گیا کیا یہ جرائم جنات کر رہے ہیں ؟ سینیٹر سراج الحق

s2

جماعت اسلامی کے مرکزی امیر سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ ملک میں 68سال سے غریبوں کے ساتھ شودروں جیسا سلوک ہو رہا ہے ٗ سیاسی پارٹیاں برہمنوں کے ٹولے بن چکی ہیں ٗ ملک کا عدالتی نظام بوسیدہ ہے جہاں پر انصاف بکتا ہے ٗ اعلی مناصب اور عہدوں پر ایک خاص طبقہ قابض ہے ٗ دنیا چاند پر پہنچ چکی ہے اور ہمارے بچے آج بھی گندگی کے ڈھیر میں رزق تلاش کر رہے ہیں ٗ کراچی میں 24ہزار لوگ شہید ہوئے آج تک کوئی نہیں پکڑا گیا کیا یہ جرم جنات کر رہے ہیں ؟جماعت اسلامی دھوکے ٗ فریب اور جھوٹ کی سیاست کو ختم کرکے نظام عدل کا نظام لائے گی ان خیالات کا اظہار انہوں نے پیر کی شب شاہی باغ پشاور میں بلدیاتی انتخابات کے سلسلے میں جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا اس موقع پر جماعت کے صوبائی امیر پروفیسر ابراہیم ٗ صوبائی جنرل سیکرٹری شبیر احمد خا ن ٗ صوبائی سیکرٹری اطلاعات اسرار اللہ ایڈووکیٹ ٗ ضلع پشاور کے امیر صابر حسین اعوان اور دیگر رہنماؤں نے شرکت کی مرکزی امیر سراج الحق نے کہا کہ دنیا چاند پرپہنچ چکی ہے اور ہمارے بچے آج بھی گندگی کے ڈھیروں میں رزق تلاش کر رہے ہیں ٗ ڈگریاں کاغذ کے بے جان ٹکڑے بن گئے ہیں بڑے عہدے اور اعلیٰ مناصب پر خاص طبقہ قابض ہے اس نظام میں غریبوں کیلئے رونے کے سوا کچھ نہیں ہے انہوں نے کہا کہ بوسیدہ عدالتی نظام کے باعث یہاں انصاف بکتا ہے یہ نظام صرف سرمایہ داروں کیلئے ہے بینکوں نے آج تک کسی غریب کو قرضہ نہیں دیاانہوں نے کہا کہ بھارت کی طرح یہاں بھی 68سال سے غریبوں کے ساتھ شودروں جیسا سلوک کیا جا رہا ہے سیاسی پارٹیاں برہمنوں کے ٹولے بن چکی ہیں ان کے اندر جمہوریت نہیں بلکہ آمریت ہے انہوں نے کہا کہ کراچی میں روزانہ خون بہہ رہا ہے وہاں قبرستان آباد ہو رہے ہیں اب تک 24ہزار لوگ شہید ہو چکے ہیں لیکن آج تک کوئی مجرم نہیں پکڑا گیا کیا ان جرائم میں جنات ملوث ہیں انہوں نے کہا کہ کہتے ہیں کہ بلوچی پاکستان کے خلاف ہیں ایسا ہرگز نہیں بلکہ بلوچی ظلم ٗ استحصال کے خلاف ہیں اب عوام کو مزید دھوکہ نہیں دیا جا سکتا ہم سب ظلم اور استحصال کے خلاف لڑیں گے انہوں نے کہا کہ ملک پر چند مغل شہزادوں کا راج ہے جن کے رشتہ دار سیاسی پارٹیاں چلا رہے ہیں انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی ہی واحد جماعت ہے جو غریبوں کی حقیقی ترجمان ہے جو دھوکے ٗ فریب اور جھوٹ کی سیاست نہیں کرتی بلکہ نظام عدل کے لئے جدوجہد کر رہی ہے انہوں نے کہا کہ تاریخ گواہ ہے کہ ہمیشہ حقائق چھپانے کی کوشش کی گئی آج تک لیاقت علی خان ٗ ضیاء الحق ٗ صلاح الدین اور دیگر قومی لیڈروں کے مجرموں کو کٹہرے میں نہیں لایا جا سکا لہٰذا حکومت ایک آزاد کمیشن تشکیل دے اور حقائق سے قوم کو آگاہ کیا جائے انہوں نے کہا کہ عالمی سطح پر بھی ہماری حکومتیں ناکام چکی ہیں کشمیری پاکستان سے محبت کرتے ہیں ڈھاکہ سے پاکستان سے محبت کرنے پر جماعت اسلامی کے رہنماؤں کے جنازے اٹھ رہے ہیں اس حوالے سے ہم نے وزیر خارجہ اوردیگر حکام سے بات کی لیکن سب سے مجرمانہ خاموشی اختیار کی ہوئی ہے انہوں نے کہا کہ وزیراعظم آمروں کا ساتھ دینے کی بجائے مصری حکومت کے خلاف احتجاج کرے ہم محمد مرسی اور اخوان المسلمین کے ساتھ ہیں سراج الحق نے کہا کہ پاک چین اقتصادی راہداری کو حکومت کو متنازعہ بنا رہی ہے جس سے انتہائی اہم منصوبے میں تعطل کا خدشہ ہے انہوں نے صوبہ بھر کی خواتین سے بھی اپیل کی کہ وہ مئی 30 مئی کو اپنا قومی فریضہ پورا کرنے کیلئے اپنا حق رائے دہی استعمال کرے انہوں نے کہا کہ پشاور کو کلین اینڈ گرین بنانے کے ساتھ امن کا قیام ترجیح ہے اگر اغواء کاروں اور بھتہ خوروں کو سرعام سزائیں دی جائیں تو کسی کی جرات نہیں ہوگی کہ وہ پھر ایسا جرم کرے انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی سپورٹس کا نیا شعبہ قائم کر رہی ہے اور ہم سپورٹس کی سہولیات کیلئے بھرپور جددجہد کریں گے انہوں نے وفاقی حکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ قبائلی علاقوں میں بھی بلدیاتی انتخابات کا انعقاد کرے جلسہ سے پروفیسر ابراہیم خان ٗ شبیر احمد خان اور صابر حسین اعوان نے بھی خطاب کیا ۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s