عام آدمی کا مسئلہ ایئر کنڈیشنر اور گاڑی نہیں بلکہ آٹا ہے ،حکمرانوں نے عام آدمی کی پریشانیوں کو کم کرنے کے بجائے ان میں اضافہ کردیا ہے ۔حکومت نے بجٹ میںعام آدمی کی ضروریات کی قیمتوں میں اضافہ کرکے عوام کی امیدوں پر پانی پھیر دیا ہے ۔ سینیٹر سراج الحق

siraj 7
لاہور7جون 2015ئ
امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ عام آدمی کا مسئلہ ایئر کنڈیشنر اور گاڑی نہیں بلکہ آٹا ہے ،حکمرانوں نے عام آدمی کی پریشانیوں کو کم کرنے کے بجائے ان میں اضافہ کردیا ہے ۔حکومت نے بجٹ میںعام آدمی کی ضروریات کی قیمتوں میں اضافہ کرکے عوام کی امیدوں پر پانی پھیر دیا ہے ۔عوام ٹیکس چوروں اور حرام خوروں سے تنگ آچکے ہیں اور ملک میں اسلامی انقلاب کیلئے اپنا سب کچھ قربان کرنے کیلئے تیار ہیں۔مشرقی تیمور اور جنوبی سوڈان کو مسلم ریاستوں سے الگ کرنے والوں کو برما میں مسلمانوں کا قتل عام کیوں نظر نہیں آتا,برما کے مسئلہ پراقوام متحدہ کے ساتھ ساتھ عالم اسلام میں بھی قبرستان کی سی خاموشی ہے ۔ مسلم دنیا کے حکمران اس وقت تک زبان نہیں کھولتے جب تک اوبامہ کسی ظلم کی مذمت نہ کردے ۔حکمرانوں کا قبلہ مکہ مکرمہ نہیں واشنگٹن ہے۔ واشنگٹن کے غلام چاہتے ہیں کہ قرآن پڑھنے اور اسلامی نظام کی بات کرنے والے ”مجرموں“ کو پکڑ کر سمندر میں پھینک دیا جائے ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے منصورہ میں مختلف شہروں سے آئے ہوئے سینکڑوںکارکنوں سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔اس موقع پر حافظ محمد ادریس بھی موجود تھے ۔
سینیٹرسراج الحق نے کہا کہ نے کہا کہ ملک میں اسلام کے عادلانہ نظام کی راہ میں امریکہ بھارت یا اسرائیل نہیں حکمران رکاوٹ ہیں ،حکمران نہیں چاہتے کہ عام آدمی ان کے برابر کھڑا ہواورعوام کی رسائی اقتدار کے ایوانوں تک ہو،انہوں نے کہا کہ ملک پر ایک استحصالی اور طبقاتی نظام مسلط ہے ،جس میں عوام کوچھوت سے زیادہ اہمیت نہیں دی جاتی ،اقتدار پر قابض طبقہ اپنے ”اسٹیس کو “کے تحفظ کیلئے عوام پر ظلم و جبر کے کوڑے برسا رہا ہے ،انہوں نے کہا کہ اب عوام اس اشرافیہ اور سیاسی پنڈتوں کے ٹولے سے بیزارہو چکے ہیں اور ملک میں اسلامی نظام اور شریعت کے نفاذ کیلئے بڑی سے بڑی قربانی دینے کیلئے تیار ہیں،عوام کرپشن اور کمیشن خوروں سے نجات کیلئے آخری حد تک جانا چاہتے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی ملک میں” اسٹیس کو “کے اس ظالمانہ نظام کے خاتمہ کیلئے عوام کی امنگوں کی ترجمانی کرے گی ۔ہم عام آدمی کو اقتدار کے ایوانوں تک پہنچانے کی جدوجہد کررہے ہیں ،انہوں کہا کہ جماعت اسلامی اقتدار میں آکر ملک سے اس استحصالی اور طبقاتی نظام کا خاتمہ کردےگی ،ہم ملک میں طرح طرح کے تعلیمی نظاموں کے بجائے یکساں نظام تعلیم رائج کریں گے جس میں عام مزدور اور محنت کش کا بیٹا بھی اسی سکول میں پڑھے گا جس میں صدر پاکستان اور وزیر اعظم کا بیٹا پڑھتا ہے ،انہوں نے کہا کہ ہم معاشرے کو مسجد کے گرد جمع کریں گے ۔بڑی بڑی سرکاری عمارتوں کو کالجوں اور یونیورسٹیوں میں تبدیل کردیں گے اور ملک میں میٹرک تک تعلیم بالکل مفت ہوگی ۔انہوں نے کہا کہ دینی مدارس میں تیس لاکھ سے زائد بچے بچیاں تعلیم حاصل کرتے ہیں مگر حکمران ان کیلئے کچھ کرنے کو صرف اس لئے تیار نہیں کہ وہ ملک میں دین کو پھلتا پھولتا نہیں دیکھنا چاہتے ہیں۔ 
سینیٹرسراج الحق نے کہا کہ برما میں روہنگیا مسلمانوں کے قتل عام پر جس طرح غیر مسلموں نے آنکھیں بند اور لبوں کو سی رکھا ہے اسی طرح مسلم دنیا کے حکمرانوں نے بھی مجرمانہ خاموشی اختیار کررکھی ہے ،انہوں نے کہا کہ اقوام متحدہ کے مسلمانوں سے امتیازی سلوک کی وجہ سے عالم اسلام میں ایک کرب کی کیفیت ہے ،دنیا میں امن کے قیام کے دعویدار مسلمانوں کے ساتھ ایک معاندانہ رویہ اختیار کیئے ہوئے ہیں،انہوں نے کہا کہ مشرقی تیمور کی انڈونیشیا ءسے علیحدگی اور جنوبی سوڈان کو سوڈان سے الگ کرکے ایک الگ ملک بنانے کے پیچھے بھی اسلام دشمنی ہے ،انہوں نے کہا کہ برما میں قتل عام رکوانے کیلئے اقوام متحدہ اور عالمی برادری کچھ نہیں کررہی جو ایک المیہ ہے ۔ انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی 14جون کو اسلام آباد میں روہنگیا مسلمانوں پر ظلم کے خلاف بہت بڑا احتجاجی مظاہرہ کرے گی۔ 

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s