بھارت اپنی حماقتوں سے باز نہ آیاتو اسے بدترین شکست سے دوچار ہونا پڑے گا ۔ پاکستان آج 65 ءکے مقابلے میں زیادہ مضبوط اور طاقتور ہے ۔ موجودہ اور سابقہ حکمران ایک ہیں اور ایک ہی رہیں گے ، ان حکمرانوں کو ملکی آزادی اور خود مختاری سے نہیں اپنے اقتدار سے غرض ہے ۔ یہی لوگ ملک و قوم کو آئی ایم ایف اور ورلڈ بنک کے قرضوں کے جال میں پھنسانے کے مجرم ہیں ۔ ہندوستان کے ہاتھ کشمیریوں کے خون سے رنگے ہیں مگر حکمران اس کو پسندیدہ نیشن قرار دیتے ہیں ۔ ان کی کرپشن نے ملک کی بنیادوں کو کھوکھلا کر دیاہے ۔۔سینیٹر سراج الحق

pic sirajul haq-00

لاہور6ستمبر2015ء
     امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ بھارت اپنی حماقتوں سے باز نہ آیاتو اسے بدترین شکست سے دوچار ہونا پڑے گا ۔ پاکستان آج 65 ءکے مقابلے میں زیادہ مضبوط اور طاقتور ہے ۔ موجودہ اور سابقہ حکمران ایک ہیں اور ایک ہی رہیں گے ، ان حکمرانوں کو ملکی آزادی اور خود مختاری سے نہیں اپنے اقتدار سے غرض ہے ۔ یہی لوگ ملک و قوم کو آئی ایم ایف اور ورلڈ بنک کے قرضوں کے جال میں پھنسانے کے مجرم ہیں ۔ ہندوستان کے ہاتھ کشمیریوں کے خون سے رنگے ہیں مگر حکمران اس کو پسندیدہ نیشن قرار دیتے ہیں ۔ ان کی کرپشن نے ملک کی بنیادوں کو کھوکھلا کر دیاہے ۔ پاکستان کے تحفظ اور آزادی کو برقرار رکھنے کے لیے مجاہد قیادت کی ضرورت ہے جو محمد بن قاسم اور محمود غزنوی کے نقش قدم پر چلتے ہوئے ہندوستان کی آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر بات کرسکے ۔ عوام ظالم جاگیرداروں کے چنگل سے آزادی حاصل کرنے کے لیے جماعت اسلامی کا ساتھ دیں ۔ جماعت اسلامی ہی اصل جمہوری اور پروگریسو جماعت ہے جو عام آدمی کے حقوق کی ضمانت دے سکتی ہے ۔ دیگر سیاسی پارٹیاں خاندانی پراپرٹیاں ہیں جو جمہوریت کے نام پر بدترین آمریت کے نرغے میں ہیں اور عوام کا استحصال کر رہی ہیں ۔ ان خیالات کااظہار انہوں نے جماعت اسلامی لاہور کے زیراہتمام یوم دفاع پاکستان کے حوالے سے وحدت روڈ گراﺅنڈ میں ہونے والی عزم نو کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ کانفرنس سے لیاقت بلوچ ، اسد اللہ بھٹو ، ڈاکٹر فرید احمد پراچہ ، امیر جماعت اسلامی لاہور میاں مقصود احمد ، اظہر اقبال حسن ، عبدالغفار عزیز اور ذکر اللہ مجاہد نے بھی خطاب کیا ۔ عزم نو کانفرنس میں ہزاروں کی تعداد میں زندہ دلان لاہور نے شرکت کی ۔ کانفرنس میں خواتین اور بچوں کی بھی بہت بڑی تعداد موجود تھے ۔
    سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ کرپشن کے ناسور سے چھٹکارے اور بدامنی سے نجات کا واحد ذریعہ خوف خدا رکھنے والی قیادت کا انتخاب ہے ۔ عوام مداریوں اور شکاریوں کے چکر سے نکلیں اور اسلام اور پاکستان سے محبت کرنے والی قیادت کا ساتھ دیں ۔ انہوں نے کہاکہ جماعت اسلامی عوام کی گردنوں کو ان ظالموں کے شکنجے سے آزاد کرانے کی صلاحیت رکھتی ہے ۔ انہوں نے کہاکہ ہماری لڑائی قومیت ، وطنیت یا کسی تعصب کے لیے نہیں بلکہ ہم عام آدمی کے حقوق کے تحفظ کی جنگ لڑ رہے ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان چارصوبوں ، پہاڑوں یا میدانوں کا نام نہیں بلکہ عقیدے اور نظریے کا نام ہے اور مدینہ کی ریاست کے بعد پاکستان واحد ریاست ہے جس کا نظریہ لا الہ الا اللہ ہے ۔ پاکستان عالم اسلام کا دھڑکتادل ہے اورہم اسے عالم اسلام کا قائد دیکھناچاہتے ہیں۔    انہوں نے کہاکہ ہم پاکستان کے تحفظ کے لیے 1965 ءمیں جانوں کے نذرانے پیش کرنے والے شہدا کو سلام پیش کرتے ہیں جنہوں نے دشمن کے ٹینکوں کے سامنے لیٹ کر جہاد کی نئی تاریخ رقم کی ۔ انہوں نے کہاکہ حالات کا تقاضا ہے کہ نوجوان اپنے اسلاف کے نقش قدم پر چلتے ہوئے جہاد کو اپنا اوڑھنا بچھونا بنائیں اور محمد بن قاسم اور محمود غزنوی کی طرح کفر کے ایوانوں میں زلزلہ پیدا کریں ۔ انہوں نے کہاکہ سینکڑوں بتوں کے پجاری مودی نے ایک اللہ کے سامنے جھکنے والوں کو للکارا ہے لیکن ہمارے جوان ایسا سبق سکھائیں گے کہ اس کی آئندہ نسلیں بھی پاکستان کی طرف میلی آنکھ سے دیکھنے کی جرا ¿ت نہیں کریں گی ۔ انہوں نے کہاکہ موجودہ اور سابقہ حکمران ایک ہیں اور ایک ہی رہیں گے یہ اپنی کرپشن کو چھپانے میں ایک دوسرے کا ساتھ دیتے ہیں ۔
    سراج الحق نے کہاکہ الیکشن کمیشن اپنی اہمیت کھو چکا ہے 2013 ءکے انتخابات میں دھاندلی کا بازار گرم تھا مگر الیکشن کمیشن اسے روکنے کے بجائے خواب خرگوش کے مزے لیتا رہا۔ انہوں نے کہاکہ اگر 1970 ءمیں الیکشن کمیشن اپناکردار ادا کرتا تو پاکستان دو لخت نہ ہوتااس لیے الیکشن کمیشن کے چار ارکان کو نہیں پورے نظام کو تبدیل ہوناچاہیے ۔ چند ایک کو ہٹا کر کوئی تبدیلی نہیں آئے گی ۔
    سراج الحق نے کہاکہ سیاست کو تجارت بنادیا گیاہے ۔ کروڑوں میں ٹکٹ خرید کر اسمبلی تک پہنچنے والے اربوں کی کرپشن کرتے ہیں ۔ انھوں نے کہاکہ اشرافیہ کا ٹولہ خود تو عالی شان بنگلوں میں رہتاہے اور لاکھوں غریب چھت سے محروم ہیں ۔ غریبوں نے ان محلوں کا رخ کرلیا تو ان وی آئی پیز کو بھاگنے کابھی موقع نہیں ملے گا ۔ انہوں نے کہاکہ چترال ، دیر اور بونیر کی ٹھنڈی ہوائیں سندھ اور پنجاب کا رخ کرنے والی ہیں ہم پاکستان کو ایک اسلامی ویلفیئر ریاست بنائیں گے جو عالم اسلامی کی قیادت کرسکے اور کشمیر فلسطین اور برما سمیت مظلوم مسلمانوں کا سہارا بن سکے ۔ انہوں نے کہاکہ جماعت اسلامی اقتدار میں آکر یکساں نصاب تعلیم دے گی ۔ مدارس اور سکولوں کا نصاب ایک ہوگا ۔ پانچ بڑی بیماریوں کا مفت علاج ہوگا اور کم آمدنی والے گھرانوں کو پانچ بنیادی ضروریات زندگی پر سبسڈی دیں گے ۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان کے تحفظ کے لیے ضروری ہے کہ یہاں سے ہر قسم کے ظلم و جبر اور استحصال کا خاتمہ ہو اور سب کو برابر کے حقوق حاصل ہوں ۔
    سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی لیاقت بلوچ نے کہاکہ جماعت اسلامی ملک کی نظریاتی و جغرافیائی سرحدوں کی امین اور پاک فوج کی پشتیبان ہے قوم میں آج بھی 65والا جذبہ زندہ ہے ۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s