اسلام آباد اور کراچی میں میٹرو بس چلانے والوں کو کوئٹہ کا خیال کیوں نہیں آیا ۔ اقتصادی راہداری کے روٹ کوتبدیل کیا گیا تو ہم سمجھیں گے حکمران خود ہی اس منصوبے کو سبوتاژ کرناچاہتے ہیں ۔سراج الحق کا کوئٹہ میں ورکرز کنونشن سے خطاب

000
کوئٹہ 9ستمبر 2015 ء
    امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہاہے کہ حکومت کی گاڑی ہچکولے کھارہی ہے چاروں صوبوں میں ایک غیر یقینی صورتحال ہے لوگ پوچھتے ہیں کہ کیا حکومت اپنی مدت پوری کر سکے گی ۔ پولیس کے چہروں پر خوف ہے ۔ وزیراعظم ، گورنر اور وزرائے اعلیٰ سیکورٹی کے حصار کے بغیر گھر سے نہیں نکلتے۔ سینکڑوں گاڑیوں اور مسلح پہرے داروں کے ساتھ گھومنے والے عوام کو تحفظ نہیں دے سکتے ۔ پاکستان کے مسائل کا ایک ہی حل ہے کہ ملک میں نوابوں ، سرداروں اور جاگیرداروں کی بجائے عوامی راج قائم ہو ۔ ملک میں نظریہ پاکستان کی حکمرانی ہو اور پارٹیوں اور افراد کی بجائے اصولوں کی بادشاہت ہو اور ذاتی و پارٹی مفادات کی بجائے قومی مقاصد کو پورا کیا جائے ۔ جماعت اسلامی پاکستان کے مرکزی میڈیا سیل کے مطابق ان خیالات کااظہار انہوں نے کوئٹہ میں ورکرز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ کنونشن سے صوبائی امیر اخونزاد ہ عبدالمتین ، مولانا عبدالحق ہاشمی اور امیر جماعت اسلامی کوئٹہ عبدالحکیم نے بھی خطاب کیا ۔
    سراج الحق نے کہاکہ لاہور ،اسلام آباد اور کراچی میں میٹرو بس چلانے والوں کو کوئٹہ کا خیال کیوں نہیں آیا ۔ اقتصادی راہداری کے روٹ کوتبدیل کیا گیا تو ہم سمجھیں گے حکمران خود ہی اس منصوبے کو سبوتاژ کرناچاہتے ہیں ۔ گوادر کی ترقی پر سب سے پہلا حق وہاں کے عوام کا ہے گوادر کی زمین آج بھی ایک کروڑ سال بعد بھی گوادر کے عوام کی رہے گی ۔ انہوں نے کہاکہ جماعت اسلامی بلوچستان کے عوام کے ساتھ ہے اور ہم کسی صورت بھی ان پرظلم برداشت نہیں کریں گے ۔سراج الحق نے کہاکہ واپڈا ، سٹیل ملزاور پی آئی اے سمیت کسی بھی قومی ادارے کی نج کاری نہیں ہونی چاہیے۔ قومی اداروں کو کسی سرمایہ دار اور جاگیردار کی جھولی میں ڈالنے کی بجائے حکومت ان کو چلانے کی کوشش کرے اور اگر ان قومی اداروں کو حکومت نہیں چلاسکتی تو ہمارے حوالے کر دے ہم ان اداروں کو منافع بخش بنائیں گے ۔
    سراج الحق نے کہاکہ بلوچستان ایک پسماندہ اور محروم صوبہ ہے اور اس کی محرومیوں میں اسلام آباد کی متعصب اور تنگ نظر بیوروکریسی کا ہاتھ ہے اور دوسری طرف بلوچستان کے اقتدار پر ایسے لوگ براجمان ہیں جنہیں عوامی مسائل سے کوئی غرض نہیں وہ صرف اپنے اقتدار کو طول دیناچاہتے ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ کرپشن ملک کا مستقل روگ بن گیاہے ۔68سال میں اقتدار میں آنے والے حکمرانوں نے دونوں ہاتھوں سے قومی دولت کو لوٹا اور بیرونی بینکوں میں منتقل کیا ۔ کرپشن کی موجودگی میں پاکستان ترقی نہیں کر سکتا ۔ چاروں صوبوں میں کرپشن کے خلاف بڑا آپریشن ہوناچاہیے اور کسی کرپٹ سیاسی لیڈر یا سرکاری افسر کو نہ چھوڑا جائے ۔ انہوں نے کہاکہ ایف آئی اے لائق اور ڈس لائق کی بنیاد پر نہیں بلکہ بلاتفریق کرپٹ لوگوں کے خلاف کاروائی کرے ۔ سراج الحق نے کہاکہ ہم اقتدار میں آ کرکرپٹ لوگوںکو گردن سے دبوچیں گے اور اس وقت تک ان کی گردن نہیں چھوڑیں کے جب تک قومی دولت کی ایک ایک پائی وصول نہ کرلیں ۔
    سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ پاکستان کے بارڈر انڈین توپوں کی زد میں ہیں بھارت کا رویہ جارحانہ جبکہ ہمارے حکمرانوں کا معذرت خواہانہ ہے ۔ استعمار کے غلام بھارت کی آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر بات کرنے کی بجائے سہمے بیٹھے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ دشمن کی آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر بات کرنے کے لیے جرا ¿ت مندقیادت کی ضرورت ہے ۔ بحرانوں میں پھنسی ملک کی کشتی کو صرف جماعت اسلامی بھنو ر سے نکال سکتی ہے ۔ ترکی ، مراکش اور الجزائر سمیت بہت سے اسلامی ممالک کے عوام نے وہاں کی اسلامی تحریکوں پر اعتماد کیا اور انشاءاللہ وہ دن دور نہیں جب پاکستان کے عوام بھی ہماری تائید کریں گے ۔ انہوں نے کہاکہ کچھ لوگ کہتے ہیں کہ اقتدار صرف امریکی ایما اور خوشنودی سے مل سکتاہے ہم ایسے اقتدار پر لعنت بھیجتے ہیں ۔ ہم انشاءاللہ عوامی قوت سے اقتدار میں آئیں گے ۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s