بھارت ظلم و جبر کے ذریعے کشمیریوں کے حق خود ارادیت کو دبا نہیں سکتا۔ کشمیری عوام اپنے مستقبل کا خود فیصلہ کریں گے۔ سید علی گیلانی اور دیگر کشمیری رہنماو ¿ں کی قیادت میں جاری جدوجہدِ آزادی کی بھرپور حمایت کرتے ہیں۔سراج الحق کا اسلام آباد میں اہلِ کشمیر کے ساتھ اظہارِ یکجہتی کے لیے نکالی گئی ریلی سے خطاب 

SARAJ-2
لاہور 7نومبر2015 ء
امیر جماعتِ اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ بھارت ظلم و جبر کے ذریعے کشمیریوں کے حق خود ارادیت کو دبا نہیں سکتا۔ کشمیری عوام اپنے مستقبل کا خود فیصلہ کریں گے۔ سید علی گیلانی اور دیگر کشمیری رہنماو ¿ں کی قیادت میں جاری جدوجہدِ آزادی کی بھرپور حمایت کرتے ہیں۔ وہ دن دور نہیں جب کشمیری عوام حقِ خود ارادیت کی جدوجہد میں کامیاب ہونگے۔ اقوامِ متحدہ اور بین الاقوامی برادری کشمیر کے حوالے سے بین الاقوامی معاہدوں پر عمل درآمد کے حوالے سے آگے آئیں اور اپنا کردار ادا کریں۔ بھارت غاصبانہ قبضے اور 7 لاکھ افواج کے ذریعے لاکھوں کشمیریوں کا قتلِ عام کرکے بھی کشمیریوں کے حق آزادی کو دبا نہیں سکا۔جماعت اسلامی کے مرکزی میڈیا سیل کے مطابق ان خیالات کا اظہار انہوں نے سید علی گیلانی کی درخواست پر آج اہلِ کشمیر کے ساتھ اظہارِ یکجہتی کے لیے اسلام آباد میں نکالی گئی احتجاجی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔
سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ پاکستانی حکومت کا فرض ہے کہ وہ اہلِ کشمیر کی اخلاقی، سیاسی اور سفارتی حمایت کے حوالے سے جدوجہد تیز کرے اور اس سلسلے میں بین الاقوامی رائے عامہ کو ہموار کرنے کے لیے اپنا کردار ادا کرے۔ انہوں نے کہا کہ بھارت کشمیری عوام پر ظلم و جبر کے پہاڑ توڑ چکا، لیکن بین الاقوامی برادری کے کان پر جوں تک نہ رینگی۔ انہوں نے کہا کہ بھارت کی موجودہ مودی سرکار کے دورِ حکومت میں فسطائیت کی حکمرانی ہے، اور وہاں پر تمام اقلیتیں غیر محفوظ ہیں۔ شیوسینا جیسی بنیاد پرست ہندو تنظیموں نے مسلمان، عیسائی، سکھ اور دیگر اقلیتوں کا بھارت میں جینا دوبھر کردیا ہے۔ اس کے باوجود بین الاقوامی برادری خاموش تماشائی کا کردار ادا کررہی ہے۔ دنیا کی سب سے بڑی جمہوریت کی دعویدار بھارت کی مودی سرکار مسلمانوں سے تعصبت پر مبنی رویہ اپنائے ہوئے ہے، اور غیر ہندووں کے خلاف ان کے جارحانہ عزائم اور نفرت انگیز کارروائیوں میں دن بہ دن اضافہ ہوتا چلا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ دنیا میں کہیں بھی ظلم و جبر کے ذریعے لوگوں کو زیادہ دیر دبایا نہیں جاسکا ہے۔ اس لیے بھارت سن لے، وہ کبھی اپنے غاصبانہ قبضے کے ذریعے کشمیری عوام کے حق خود ارادیت کی آواز کو دبا نہیں سکتا۔ کشمیری عوام اپنی قیادت کے ساتھ آج بھی متحد و متفق ہیں، اور 68 سال تک بھارت ان پر ظلم و جبر کرکے کشمیری عوام کے عزم اور حوصلے کو متزلزل نہیں کرسکا۔ سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ پاکستانی عوام ہمیشہ کی طرح آج بھی اپنے کشمیری بھائیوں کے شانہ بشانہ کھڑے ہیں، اور آج کی یہ ریلی اس بات کا بین ثبوت ہے کہ کشمیر کی آزادی تک پاکستانی عوام اُن کی سیاسی، اخلاقی اور سفارتی حمایت جاری رکھیں گے۔ قائد اعظم علی الرحمہ نے کشمیر کو پاکستان کہ شہہ رگ کہا ہے اور ہم اپنی شہہ رگ کو کسی صورت دشمن بھارت کے ہاتھ میں جانے نہیں دیں گے۔ریلی میں پاکستانی، کشمیری عوام اور رہنماو ¿ں کی ایک بہت بڑی تعداد نے شرکت کی، اور سید علی گیلانی کی درخواست پر انسانی ہاتھوں کی زنجیر بناکر اہلِ کشمیر کے ساتھ اپنی گہری محبت اور یکجہتی کا اظہار کیا۔#
سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ بھارتی سرکارنے خود بھارت میں ایک اور پاکستان بنانے کا ماحول بنایا ہے ۔ انتہاءپسند نریندر حکومت کے رویے کی وجہ سے بھارت میں ایک اور پاکستان بن ر ہا ہے ۔ سری نگر خود کو اسلام آباد سے دور نہ سمجھے ۔ وہاں جاری آزادی کی تحریک کے پر جوش نوجوانوں، آزادی کے متوالوں اور سرفروشوں کی پشت پر 18کروڑ پاکستانی ہیں۔عبدالرشید ترابی نے کہا کہ جماعت اسلامی استحصالی اور فرسودہ نظام کی تبدیلی کے لیے جدوجہد کو تیز کرے گی اور کارکن ظلم اور نا انصافی پر مبنی نظام کے خلاف جہاد کرے،انہوں نے کہا کہ ظلم پر مبنی نظام زیادہ دیر قائم نہیں رہ سکتا عوام کے حقوق غصب کرنے والوں کا انجام قریب آچکا ہے
قبل ازیں سینیٹر سراج الحق نے جماعت اسلامی آزاد جموںوکشمیر کے 42ویں جنرل کونسل کے اجلاس سے بھی خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کہا کہ کشمیریوں نے ایک بار پھر ثابت کردیاہے کہ وہ ہندوستان کے ساتھ نہیں رہنا چاہتے،بھارت طاقت کے زور پر کشمیریوںکو غلام نہیں رکھ سکتا،غلامی کا دور بیت چکا ہے 2016آزادی کا سال ہے،پاکستان کے 18کروڑ عوام کشمیریوںکے ساتھ ہیں،حکومت پاکستان بھارت کو عالمی سطح پر نے نقاب کرنے کے لیے جارحانہ سفارتی مہم منظم کرے،عالمی برادری کشمیریوںکو حق دلانے میں اپنا کردار اداکرے،مودی نے اپنی انتہا پسندانہ پالیسیوںکے باعث پورے خطے کے امن کا خطرے میں ڈال دیاہے۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s