حکومت پاکستان مودی اور بنگلہ دیش میں پھانسیوں کے خلاف عالمی عدالت انصاف میں جائے۔سراج الحق

Siraj Ul Haq 6 Dec copy
کوٹلی۔۔
امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ آزادی کشمیر کے حوالے سے حکمرانوں کا رویہ انتہائی غیر سنجیدہ ہے ۔پاکستان کی سلامتی اور بقا کی ضمانت صرف آزادی کشمیر سے دی جاسکتی ہے ۔وزیر اعظم بیرونی سرمائے کے حصول کیلئے روزانہ بیرونی دوروں پر ہوتے ہیںاگر اتنی تگ و دو کشمیر کے مسئلہ کو عالمی سطح پراجاگر کرنے کیلئے کرتے توآج ملک کو کسی بیرونی امداد اور سرمائے کی ضرورت نہ ہوتی ۔وزیر اعظم جس طرح جہاز بھر کر سرمایہ ڈھونڈنے جاتے ہیں کبھی اوآئی سی اور اسلامی ممالک کے حکمرانوں کو بھی ساتھ بٹھا کر اقوام متحدہ میں جائیں اور کشمیر اور فلسطین کے مظلوم مسلمانوں کی آواز بنیں ۔لاکھوں کشمیری پاکستان پر قربان ہوچکے ہیں مگر ہمارے حکمرانوں نے ان کی قربانیوں کو ضائع کرکے مودی کی گود میں بیٹھنے کیلئے بے چین ہیں۔خطے میں قیام امن کیلئے مسئلہ کا فوری حل ہونا ضروری ہے ،بھارت میں بڑھتی ہوئی انتہاپسندی خطے کے امن پر لٹکتی تلوار ہے ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے کوٹلی آزاد کشمیر میں بڑے عوامی جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔جلسہ سے امیر جماعت اسلامی آزاد کشمیر عبد الرشید ترابی ،محمود الحسن گیلانی ،حبیب الرحمن آفاقی اور ارشد ندیم نے بھی خطاب کیا ۔
سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ خطے میں اس وقت تک امن کے قیام کی ضمانت نہیں دی جاسکتی جب تک مسئلہ کشمیر حل نہیں ہوتا ،پاکستان اور بھارت کے درمیان اصل تنازعہ کشمیر کا مسئلہ ہے ،جسے حل کئے بغیر تعلقات کی بحالی کے مصنوعی اقدامات سے دونوں ممالک کے درمیان کشیدگی ختم نہیں ہوسکتی ۔انہوں نے کہا کہ کشمیر کی آزادی قومی ایجنڈا ہے جس سے انحراف کرنے والے کو قوم ایک لمحہ کیلئے برداشت نہیں کرے گی اس لئے حکمرانون کو چاہئے کہ آلو پیاز ٹماٹر کی تجارت اور فنکاروں اور اداکاروں کے طائفوں اور کرکٹ ڈپلومیسی کی باتیں چھوڑ کر سنجیدگی سے اس مسئلہ کے حل کی طرف توجہ دینی چاہئے ۔انہوں نے کہا کہ جب پاکستانی حکمران مودی جیسے قاتل سے ہاتھ ملاتے ہیں تو کشمیر ی شہداءکے والدین کے سینے چھلنی ہوجاتے ہیں ،بھارت کو پسندیدہ ملک قراردیکراور دوستی کی پینگیں بڑھاکرحکمران کشمیر یوں کے زخموں پر نمک پاشی کرتے ہیں ۔کشمیری مسلمانوں نے قربانیوں کی نئی تاریخ رقم کی ہے اور وہ آج بھی پاکستان کی تکمیل کی جنگ جاری رکھے ہوئے ہیں ،لیکن ہمارے حکمرانوں کو امریکہ بھارت کی خوشنودی اور اپنے سرمائے میں اضافہ کرنے کے علاوہ دوسرا کوئی کام نہیں سوجھتا۔انہوں نے کہا کہ ملک پر ایک استحصالی اور ظالمانہ نظام مسلط کردیا گیا ہے ،امیر اورغریب کے درمیان خلیج روز بروز وسیع ہورہی ہے ،امیروں کے بنگلوں میں شہزادے اور غریب کی جھونپڑی میں غریب اگتے ہیں ،جو ساری عمر غربت سے لڑتے مر جاتے ہیں ہیں موت سے ابترزندگی گزارتے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ میں ایسے ظلم و جبر کے نظام کا باغی ہوں ۔ 
سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ امریکہ برطانیہ اور بھارت پر الزام لگانے سے پہلے ہمارے عوام کو بھی اپنے گریبانوں میں جھانکنا چاہئے کہ انہوں نے آج تک اپنے مظلوم کشمیری بہن بھائیوں کی آزادی کیلئے کیا کیا ہے ،عوام نے آج تک ایسی مخلص قیادت کا انتخاب نہیں کیا جو کشمیر کی آزادی کو اپنا ہدف بناتی بلکہ ہم نے اپنی گردنوں پر ہمشیہ ایسے لوگوں کوسوار کیا جنہوں نے پاکستان کے مفادات کا تحفظ کرنے کی بجائے اپنے ذاتی مفادات کو پروان چڑھایا اور قومی دولت کو لوٹ کر بیرونی بنکوںمیں جمع کروایا ۔انہوں نے کہا کہ سالانہ چار ہزار ارب روپے کی کرپشن کو روک کر ہم اپنے عوام کو تعلیم ،صحت ،روز گاراور چھت کی سہولتیں دے سکتے ہیں،انہوں نے کہا کہ حکومت کی طرف سے چالیس ارب روپے کے نئے ٹیکس لگانے سے مہنگائی کا نیا سیلاب آئے گا جس سے عام آدمی کی قوت خرید جو پہلے ہی نہ ہونے کے برابر ہے اس میں کئی گنا اضافہ ہوجائے گا۔بہتر یہ تھا کہ حکمران عوام پر ترس کھاتے اور ٹیکس لگانے کے بجائے کرپشن اور غیر ترقیاتی اخراجات کو روکتے اور بیرون ملک پڑا ہوا قومی سرمایہ ملک میں لاتے ۔انہوں نے کہا کہ حکمرانوں کے پاس بہت کم وقت رہ گیا ہے ،اگر انہوں نے اپنے منشور پر عمل اور اپنے وعدوں کو پورانہ کیا تو بلدیاتی انتخابات میں ملنے والی کامیابی ان کے کسی کام نہیں آسکے گی ۔ انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن چپ سادھ کر بیٹھنے کے بجائے آئندہ قومی انتخابات سے قبل انتخابی اصلاحات کو یقینی بنائے تاکہ ایک بار پھر لٹیروں اور کرپٹ مافیا کو قوم کی گردنوں پر سوار ہونے کا موقع نہ مل سکے ۔۔
Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s