مدارس اور سکولوں میں ایک ہی نصاب پڑھائیں گے۔ اور آئمہ مساجد کے لیے پولیس اور فوجی سپاہیوں کی طرح تنخواہیں دیں گے۔سینیٹرسراج الحق

S01

 جماعت اسلامی پاکستان کے امیرسینیٹرسراج الحق نے کہا ہے کہ ہم مدارس اور سکولوں میں ایک ہی نصاب پڑھائیں گے۔ اور آئمہ مساجد کے لیے پولیس اور فوجی سپاہیوں کی طرح تنخواہیں دیں گے۔وہ المرکز اسلامی پشاور میں جمعیت طلبہ عربیہ کے زیر اہتمام نفاذ اسلام کانفرنس سے خطاب کر رہے تھے۔کانفرنس سے صوبائی امیر مشتاق احمد خان،سابق ایم این اے مولانا عبدالاکبر چترالی اور جمعیت طلبہ عربیہ کے صوبائی منتظم حافظ شمشیر خان نے بھی خطاب کیا۔ سراج الحق نے کہا کہ بچوں کو تعلیم کی بنیاد پر مدارس اور سکولوں میں تقسیم کرنا او ان کو دینی اور دنیاوی نصابات میں تقسیم کرنا امت کو تقسیم کرنے کے مترادفت ہے ہم حکومت میں آکر اس تقسیم کو ختم کر دیں گے۔انھوں نے کہا کہ جس طرح زندگی کے تمام شعبوں میں ملازمین کو تنخواہیں دی جاتی ہیں ۔اسی طرح آئمہ اور مدارس میں قرآن پڑھانے والوں کو بھی حکومت کے خزانے سے تنخواہیں ملنی چاہیے۔اس کے لیے وسائل کی کوئی کمی نہیں اپنی تجوریاں بھرنے والے کرپٹ لوگوں سے چھین کر حق داروں پر وسائل خرچ کریں گے۔سراج الحق نے کہا کہ قومی احتساب بیورو نے اب تک 375ارب روپے کی جو لوٹی ہوئی رقم برآمد کی ہے اس میں سے دینی مدارس کے ایک بھی طالب علم یا استاد سے ایک بھی روپیہ برآمد نہیں ہوا ہے۔سارے لٹیروں کا تعلق مغرب کے اعلیٰ تعلیمی اداروں میں پڑے ہوئے اشرافیہ سے ہے۔ جنھوں نے بیرون ملک بینکوں میں اکونٹ کھول رکھے ہیں اور قومی دولت اس میں جمع کر رہے ہیں۔سراج الحق نے کہا کہ دینی مدارس سے فارغ التحصیل کسی بھی فرد نے کبھی بھی پاکستان کے خلاف کوئی بات کی ہے نہ اس ملک جھنڈا جلایا ہے اور نہ ملک کی تقسیم کی کوئی سازش کی ہے لیکن مغربی ادروں کے فارغ اشرافیہ یہ سب کچھ کرتا ہے۔انھوں نے صوبائی حکومت کو مشورہ دیا کہ سنیمائیں آباد کرنے سے پہلے زلزلہ میں شہید ہونے والی مساجد کو آباد کرے اور ان لوگوں کو چھتیں فراہم کرے جو زلزلہ کے بعد تاحال چھتوں سے محروم ہیں۔سراج الحق نے کہا کہ دینی مدارس اور قرآن کی تعلیم دینے والے اداروں کو بدنام کرنا اور ان کے خلاف پروپیگنڈاکرنا ایک طرف اللہ کے عذاب کو دعوت دینے کے مترادف ہے تو دوسری طرف آئین پاکستان کی کھلم کھلا خلاف ورزی۔ دستور پاکستان میں صاف صاف لکھا ہے کہ قرآن کی تعلیم عام کرنا حکومت کی ذمہ داری ہے۔سراج الحق نے سندھ اسمبلی کا اجلاس نماز جمعہ کے دوران جاری رکھنے کے سپیکرسندھ اسمبلی کے اقدام کی مذمت کی اور اسے قرآنی احکامات کی صریح خلاف ورزی قرار دیا۔سراج الحق نے کہا کہ پنجاب حکومت نے تبلیغی جماعت پر پابندی لگائی ہے میں خود رئے ؤنڈ گیا ہوں اللہ کی دعوت کا کام کرنے والے تبلیغی جماعت کے سربراہ حاجی عبدالوہاب سے ملاقات کی سعادتت حاصل کی ہے وہ95 سال کی عمر میں پاکستان اور امت مسلمہ کو دعائیں دیتے ہیں ان کے ارگرد ہر وقت ہزاروں اللہ والے لوگ موجود رہتے ہیں ان کے کام پر پابندی لگا کر حکومت پنجاب نے امریکہ کو خوش کرنے کی کوشش کی ہے اور بہت بڑا گنا ہ اپنے سر لے لیا ہے۔سراج الحق نے کہا کہ اسلامی پاکستان خوشحال پاکستان کی تحریک میں علما ہمارا ہراول دستہ ہے ہم ان کے اور وہ ہمارے ساتھ ہیں۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s