جماعت اسلامی خیبرپختونخوا نے ادویات کے قیمتوں میں اضافہ کے خلاف عدالت جانے کا اعلان کر دیا ۔ اس ظلم کے خلاف عدالت کا دروازہ کھٹکھٹائیں گے ۔ مشتا ق احمدخان

Pic Muahstaq Ahmad Khan2, 15-02-2016

مشتاق احمد خان نے کہا ہے کہ جان بچانے والی ادویات سمیت دیگر دواؤں کی قیمتوں میں 120فیصد اضافے سے غریب عوام کے لئے اپنا علاج کرانا اور بھی مشکل ہوجائے گا۔ ادویات کی قیمتوں میں اضافہ ظلم ہے۔ اس ظلم کے خلاف عدالت کا دروازہ کھٹکھٹائیں گے۔بڑھتی ہوئی مہنگائی سے پہلے ہی عوام کا جینا دوبھر ہے دوائیوں کی قیمتوں میں اضافے سے رہی سہی کسر بھی پوری ہوجائے گی۔ ادویات کی قیمتوں میں بے تحاشا اضافے پر حکومت اور اپوزیشن کی خاموشی سمجھ سے بالاتر ہے۔ ملک میں ادویات کے قیمتوں کے تعین کے لئے وفاقی حکومت میکنزم بنائے اور موثر قانون سازی کرے۔ وزیر اعظم ہر بات پر بھارت کی مثال دیتے ہیں لیکن بھارت میں جان بچانے والی ادویات کی قیمتیں پاکستان کے مقابلے میں آدھی سے بھی کم ہیں۔پورے جنوبی ایشیا میں پاکستان ہی واحد ملک ہے جس میں ادویات کی قیمتیں سب سے زیادہ ہیں۔ وزیر اعظم اور وزیر مملکت برائے صحت ادویہ ساز کمپنیوں کو لگام دیں اور انہیں ادویات کی قیمتوں میں ازخود اضافے سے روکیں اور ادویات کی قیمتوں کو کم کرکے عوام کو ریلیف دیں۔حکومت بجلی، گیس اور اشیائے ضروریہ کے نرخوں میں مسلسل اضافہ کررہی ہے۔ جبکہ آئے روز نئے ٹیکسز بھی لگائے جارہے ہیں۔ حکمران غیرب عوام پر رحم کریں اور اپنی عیاشیوں اور لوٹ مار کے لئے غریب عوام کا استحصال بند کریں۔ جماعت اسلامی اتحصالی طبقے کے خلاف میدان میں ہے۔ جماعت اسلامی کی حکومت آئی تو پانچ بیماریوں کا علاج مفت ہوگا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے المرکزالاسلامی میں مختلف وفود سے ملاقات کے دوران کیا۔ مشتاق احمد خان نے کہا کہ ادویہ ساز کمپنیوں کی جانب سے دوائیوں کی قیمتوں میں 70سے 120فیصد تک اضافہ قابل مذمت ہے۔ پاکستان میں علاج معالجے کی سہولیات ویسے بھی انتہائی مہنگی ہیں ۔جان بچانے والی ادویات مہنگی ہونے کے ساتھ ساتھ ناپید بھی ہیں۔ اب ان کی قیمتوں میں بے تحاشا اضافے سے غریب عوام کو اپنے علاج اور دوائیوں کی خریداری میں مزید مشکلات کا سامنا کرنا پڑے گا۔ دوائیاں پہلے ہی عوام کی قوت خرید سے باہر ہیں، حالیہ اضافے نے رہی سہی کسر بھی پوری کردی۔ انہوں نے کہا کہ ادویہ کی قیمتوں میں اضافے پر حکومت اور اپوزیشن جماعتوں کی خاموشی پر تعجب ہوا ہے۔اس معاملے پر حکومت اور اپوزیشن کی خاموشی معنی خیز ہے۔ جماعت اسلامی کے ایم این ایز کو قومی اسمبلی میں ادویات کی قیمتوں میں اضافے کے خلاف قرارداد پیش کرنے کا کہہ دیا ہے۔ جبکہ ادویہ ساز کمپنیوں کے خلاف عدالتی جنگ لڑنے کے لئے وکلاء سے مشورہ کررہے ہیں۔ جماعت اسلامی کسی بھی موقع پر عوام کو تنہا نہیں چھوڑے گی۔ انہوں نے کہا کہ نہایت افسوس کی بات ہے کہ ملک میں اب تک دوائیوں کی قیمتوں کے تعین کے لئے کوئی فارمولا موجود نہیں ہے اور نا ہی اس کے لئے کوئی قانون سازی کی گئی ہے۔ وفاقی حکومت فوری طور پر دوائیوں کی قیمتوں میں کمی کرائے اور ادویہ ساز کمپنیوں کو قانونی دائرے کے اندر لاتے ہوئے قیمتوں کے تعین کے لئے میکنزم تیار کرے اور قانون سازی کرے۔ عوام کو علاج معالجے کی مفت سہولیات پہنچانا حکومت کی ذمہ داری ہے۔ حکومت دوائیوں کی قیمتوں میں کمی کا اعلان کرتے ہوئے اور غریب عوام کو دوائیوں پر سبسڈی دے۔ انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی کے اسلامی پاکستان خوشحال پاکستان میں پانچ مہلک بیماریوں کا مفت علاج ہوگا۔ ان بیماریوں میں کینسر، امراض قلب، گردوں کی بیماری، یرقان اور تھیلی سیمیا کا علاج سرکاری طور پر ہوگا اور مریضوں کو مفت طبی سہولیات فراہم کی جائیں گی۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s