کرپشن فری پاکستان ہر فرد کی ضرورت ہے ۔ بلوچستان میں طبقاتی نظام کی وجہ سے احساس محرومی پایا جاتاہے، ملک میں نظام مصطفےٰ چاہتے ہیں۔ بلوچستان وسائل سے مالا مال صوبہ ہےجو بدامنی اور بےروزگاری کانقشہ پیش کررہاہے ۔سینیٹر سراج الحق کا کوئٹہ میں کنونشن اور استقبالیہ تقریب سے خطاب

 000
امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہاہے کہ کرپشن فری پاکستان ہر فرد کی ضرورت ہے ۔ بلوچستان میں طبقاتی نظام کی وجہ سے احساس محرومی پایا جاتاہے، ملک میں نظام مصطفےٰ چاہتے ہیں۔ بلوچستان وسائل سے مالا مال صوبہ ہے جو بدامنی اور بے روزگاری کا نقشہ پیش کر رہاہے ۔ پاکستان اس وقت مشکل صورتحال سے دوچار ہے ۔ لوگوں کے اندر احساس محرومی ہے ۔ وسائل کی غیر منصفانہ تقسیم ہے ۔ ملک پر کرپٹ اشرافیہ مسلط ہے ۔ چوہدریوں ، نوابوں اور سرداروں نے عوام کا استحصال کیاہے ۔ ہر طرف کرپشن ہے ۔ پاکستان اسلامی نظام کے لیے حاصل کیا گیا تھا لیکن سازش کے تحت عوامی راج اور اسلامی نظام نافذ نہ ہونے دیا گیا جس کی وجہ سے ملک دو لخت ہوا ۔ اسلام کا راستہ روک کر مارشل لاءاور جمہوریت کے نام پر استحصالی نظام نافذ کیا گیا ۔ جماعت اسلامی کے مرکزی میڈیا سیل کے مطابق ان خیالات کااظہار انہوں نے کوئٹہ میں جمعیت طلبہ عربیہ کے زیراہتمام کنونشن اور جماعت اسلامی کوئٹہ کی طرف سے دیے گئے استقبالیہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔
سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ عوام ملک کی ترقی و استحکام پر اس وقت یقین کریں گے جب یہاں قانون اور انصاف کی حکمرانی ہوگی ۔ کرپشن کا خاتمہ ہوگا ، لوٹ مار ختم ہو گی ۔ انہوں نے کہاکہ بلوچستان میں وسائل اور معدنیات کی کمی نہیں ہے ۔ معدنیات سے مالا مال صوبہ ہے ۔ اشرافیہ نے وسائل پر قبضہ کر رکھاہے ۔ سیاست اور معیشت کویرغمال بنارکھاہے ۔ انہوں نے کہاکہ ملک میں مسلح دہشتگردی کے ساتھ معاشی دہشتگردی بھی ہے ۔ قومی اداروں کو حکمرانوں نے لوٹ کھایا ہے ۔ ریلوے ، پی آئی اے ، سٹیل ملز خسارے میں ہیں انہیں کسی غریب اور عام آدمی نے نہیں لوٹا ، اشرافیہ نے لوٹاہے ۔ وزیر خزانہ نے اعتراف کیا ہے کہ دو سو ارب ڈالر بیرون ملک بنکوں میں جمع کرائے گئے ہیں ۔ مجموعی طور پر 345 ارب ڈالر بیرونی ملکوں میں پاکستانیوں کے جمع ہیں یہ رقم ملک میں آ جائے تو قرضے بھی اتر جائیں گے وار ملک بھی خوشحال ہو جائے گا ۔ حکمران ورلڈ بنک اور آئی ایم ایف سے مسلسل قرض لیتے چلے جارہے ہیں اور عوام کی حالت روز بروز مہنگائی کی وجہ سے خراب ہوتی جارہی ہے ۔وزیروں ومشیروں کے بیٹے سرکاری سکولوں میں تعلیم حاصل نہیں کرتے ، وزرا علاج کے لیے بیرون ملک چلے جاتے ہیں ، غریب کا بچہ تعلیم اور دوائی کے لیے دھکے کھاتاہے ۔ انہوں نے کہاکہ عوام جن کو ووٹ دیتے ہیں وہ سات پشتوں کے لیے ڈکار لیے بغیر اربوں روپے لوٹ کر جمع کر لیتے ہیں ۔ انہوں نے الیکشن کمیشن سے مطالبہ کیا کہ ملک کی سیاسی جماعتوں کو اس بات کا پابند کیا جائے کہ وہ اپنی جماعت میں الیکشن کروائیں ورنہ انہیں قومی انتخابات میں حصہ نہیں لینے دیا جائے گا ۔ الیکشن کمیشن کو دستور کی دفعہ 62-63 پر سختی سے عمل کراناچاہیے ۔ غریب عوام کے مسائل اس وقت حل ہوں گے جب عام پاکستانی اسمبلی میں جائے گا جو موجودہ سسٹم میں ممکن نہیں ۔ انہوں نے کہاکہ ہم برسراقتدار آئے تو ایسا سسٹم بنائیں گے کہ عام آدمی بھی کروڑوں خرچ کیے بغیر اسمبلی میں پہنچ سکے گا ۔ ہم اقلیتوں کو خوشحال رکھیں گے انہیں ہندو ، عیسائی کے بجائے پاکستانی کہا جائے گا ۔ میں بلوچستان کے عوام کا حامی ہوں یہاں کے وسائل پر بلوچستان کے لوگوں کا حق ہے ۔ انہوں نے کہاکہ جماعت اسلامی پاکستان کو ترقی کی طرف لے جاسکتی ہے ۔ جماعت اسلامی ہی ملک میں عدل و انصاف کا نظام لاسکتی ہے ۔ عوام جماعت اسلامی کا ساتھ دیں ۔ استقبالیہ تقریب میں درجنوں قبائلی عمائدین اور نوجوانوں نے جماعت اسلامی میں شمولیت کا اعلان کیا ۔
Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s