کرپشن کے خلاف جماعت اسلامی 22اگست کو سپریم کورٹ آف پاکستان میں رٹ پٹیشن دائر کرے گی جس میں سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن کے سیکرٹری جنرل اسد منظور بٹ جماعت اسلامی کے وکیل ہوں گے۔سینیٹر سراج الحق کی پشاور میں پریس کانفرنس

a2

لاہور 16اگست 2016ء
امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ کرپشن کے خلاف جماعت اسلامی 22اگست کو سپریم کورٹ آف پاکستان میں رٹ پٹیشن دائر کرے گی جس میں سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن کے سیکرٹری جنرل اسد منظور بٹ جماعت اسلامی کے وکیل ہوں گے۔ ان خیالات کااظہار انہوں نے  منگل کے روز المرکز اسلامی پشاور میں ہنگامی پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر امیر جماعت اسلامی خیبر پختونخوا مشتاق احمد خا اورافغان امور کے مشیر شبیر احمد خان بھی موجود تھے۔
سینیٹرسراج الحق نے صوبائی حکومت سے مطالبہ کیا کہ افغان مہاجرین کے ساتھ نامناسب رویہ ترک کر دے ۔انہوں نے نے کہا کہ عوام کے سامنے اپنا منشور رکھنا اور اپنے مطالبات کے لیے جلسے جلوس کرنا ہر سیاسی جماعت کا حق ہے اور اگر پاکستان عوامی تحریک اپنے14شہید کارکنوں کے قاتلوں کو سزا دینے کے لیے تحریک چلاتی ہے تو ہم اس کی حمایت کرتے ہیں۔سراج الحق نے کہا کہ سوئس بینکوں کی رپورٹ کے مطابق وہاں پر پاکستانیوں کے200ارب ڈالر پڑے ہیں اس کی تصدیق وہاں کے وزیر خزانہ نے کی ہے۔انھوں نے کہا حکومت پاکستان نے سوئٹزر لینڈ کی حکومت سے معاہدہ کیا ہے جس کے تحت وہ 2017ءتک حکومت پاکستان کو وہاں کے بینکوں میں پاکستانیوں کے سرمایہ کی تفصیلات سے آگاہ کرے گا،آگے اس پر کیا عمل ہوتا ہے اس کے لیے قیامت تک انتظار کرنا ہو گا۔ انھوں نے کہا کہ پانامہ لیکس میں پوری دنیا کو معلوم ہوا کہ وزیر اعظم اور ان کے خاندان سمیت بہت بڑی تعداد میں لوگوں نے قومی خزانے کے اربوں روپے بیرون ملک لگا رکھے ہیں۔یہ اتنااہم مسئلہ تھا کہ وزیر اعظم نے تین مرتبہ اس پر قوم سے خطاب کیا۔حکومت نے سپریم کورٹ کے رجسٹرار کو1956ءکے ایکٹ کے تحت کمیشن کے قیام کی ہدایت کی جس کو سپریم کورٹ نے واپس کرکے کہا کہ56ءکا قانون دانتوں کے بغیر ہے اور اس کے تحت قائم کردہ کمیشن کا کوئی فائدہ نہ ہوگا۔سپریم کورٹ نے حکومت کو مشورہ دیا کہ اس ایکٹ میں ترمیم کرے اور واضح طور پر سپریم کورٹ کو افراد اور اداروں کے نام بتا کر کرپشن کے خلاف کارروائی کے لیے لکھے۔انھوںنے کہا کہ حکومت نے سپریم کورٹ کی ہدایات اور اپوزیشن کے مطالبات اور اس کے تیار کردہ ٹی او آرز کو نظر انداز کیا اور مذاکرات کومحض وقت ٹالنے کا بہانہ بنایا جس کے بعد ہم نے فیصلہ کیا ہے کہ اب سپریم کورٹ میں اس کے خلاف رٹ دائر کریں گے۔ا نھوں نے کہا کہ کرپشن کے خلاف ہم 15ماہ سے ملک گیر تحریک چلا رہے ہیں۔ہم نے تین دن تک عظیم الشان ٹرین مارچ کیا،کئی مقامات پر عوام نے ہمارا استقبال کرکے کرپشن کے خلاف ہمارا ساتھ دیا انھوں نے کہا۔ کہ اب کرپشن کے خلاف یہ جنگ ہم ایوانوں ،چوکوں اور چوراہوں کے علاوہ عدالتوں میں بھی لڑیں گے۔ انہوں نے کہاکہ سپریم کورٹ حکومت کو1956ءکے ایکٹ میں ترمیم کرنے کا حکم دے اور ایک ایسا کمیشن قائم کیا جائے جو پانامہ لیکس سمیت کرپشن میں ملوث تمام سیاسی اور غیر سیاسی لوگوں کے خلاف تحقیقات اور ان کے خلاف مقدمات کے علاوہ سزا بھی دے ۔انھوں نے کہا ہمارے ارکان قومی اسمبلی نے قانونی بل پیش کیا ہے جس میں نیب قوانین میں ترمیم پیش کی گئی ہے انھوں نے کہا کہ یہ کہاں کا انصاف ہے کہ ملکی خزانہ سے ایک ارب روپے لوٹنے والانیب کو دس کروڑ روپے واپس کر کے اپنے آپ کو صاف کر لیتا ہے۔انھوں نے کہا میں نے سینیٹ بھی تمام جماعتوں سے مطالبہ کیا ہے کہ ملکی سطح پر احتساب سے پہلے اپنے اندر سے کرپٹ عناصر کوباہر نکالیں۔ انھوں نے کہا کہ مالیات کے طالب علم کی حیثیت سے میں نے اس پر کام کیا ہے اور اس نتیجے پر پہنچا ہوں کہ اگر ملک سے کرپشن کے موذی مرض کا خاتمہ ہو جائے تو یہاں پر لوڈ شیڈنگ کا خاتمہ ہو سکتا ہے۔بے روزگار نوجوانوں کو روزگار الاﺅنس مل سکتا ہے۔علاج اور تعلیم مفت ہو سکتے ہیں بڑھاپا الاﺅنس دیے جا سکتے ہیں اور پاکستان خوشحال ملک بن سکتا ہے۔افغان مہاجرین کی جبری واپسی سے متعلق سوال کے جواب میں انھوں نے کہا کہ وہ خود اپنے ملک جانا چاہتے ہیں لیکن وفاقی ادارے اور صوبائی حکومت جس خراب انداز میں ان کو دھکیل رہے ہیں ےہ پاکستان کے مفاد میںنہیں اور اس کے نتائج پاکستان کے لیے اچھے نہیں نکلیں گے۔انھوں نے کہا کہ اس طرح35سال تک پاکستان کی مہمان نوازی پر پانی پھر جائے گا انھوں نے صوبائی حکومت سے مطالبہ کیا کہ مہاجرین کو زبردستی واپس نہ بھیجا جائے اور ان سے باعزت سلوک کیا جائے۔
Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s