بلدیاتی اداروں کی بحالی سے صوبے میں بڑی سیاسی و معاشرتی تبدیلی نظر آرہی ہے۔عنایت اللہ

پشاور (ہینڈ آؤٹ)خیبر پختونخوا کے سینئر وزیر بلدیات و دیہی ترقی و پارلیمانی لیڈرجماعت اسلامی عنایت اﷲ خان نے ویلج اور نبر ہوڈ ناظمین کو ہدایت کی ہے کہ وہ بلدیاتی نظام کے نتیجے میں صحت، تعلیم،مواصلات ،آبنوشی اور سینیٹیشن کے حوالے سے خدمات کی فراہمی میں مزید بہتری لائیں اور نئے بلدیاتی نظام کو مزید مستحکم اور فعال بنانے میں اپنا بھرپور کردار ادا کریں۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے پشاور میں نائب امیر جماعت اسلامی ناظم فضل اﷲ کی قیادت میں آل ناظمین ویلج کونسل آرگنائزنگ کمیٹی پشاور کے نمائندہ وفد سے ملاقات کے دوران بات چیت کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر سیکرٹری بلدیات سید جمال الدین شاہ،ڈائریکٹر جنرل لوکل گورنمنٹ عامر لطیف، اے ڈی بلدیات محمد ریاض، ناظم امان اﷲ،ناظم عالمزیب خان، ناظم ملک مجاہد وغیر ہ نے شرکت کی۔وفد نے سینئر وزیر بلدیات کو انہیں درپیش مسائل سے آگاہ کو کیا ۔جن میں فنڈز کی فراہمی ،سافٹ وےئر ،موبائل فون اور انٹرٹینمنٹ چارجز، اعزازیہ میں اضافہ اور بلدیات کے دفتر پشاور کے سٹاف کی ناخوشگوار رویوں کی شکایات شامل تھیں۔عنایت اﷲ نے وفد کے مسائل غور سے سنے اور کہا کہ بلدیاتی اداروں کی بحالی سے صوبے میں بڑی سیاسی و معاشرتی تبدیلی نظر آرہی ہے لہٰذ ا تمام ناظمین نچلی سطح پر عوامی فلاح و بہبود پر بھرپور توجہ دیں اور ترقیاتی بجٹ کو بلاامتیاز استعما ل کو یقینی بنائیں۔انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت کی خواہش ہے کہ تمام بلدیاتی ادارے مزید ترقی کریں اور صوبے میں بلدیاتی نظام فعال ہو اور ناظمین احسن انداز میں اپنی ذمہ داریاں پوری کرسکیں۔عنایت اﷲ نے ناظمین کے مسائل کے حل کیلئے متعلقہ حکام کو ہدایت کی کہ لوکل گورنمنٹ 2013کے قواعد و ضوابط رولز آف بزنس، بجٹ پاس کرانے، ترقیاتی فنڈز کے استعمال و دیگر طریقہ کار کے بارے میں ناظمین کیلئے بنیادی تعلیم و تربیت کی فراہمی یقینی بنائیں اور انہیں ضروری سہولیات بہم پہنچائیں۔انہوں نے چیک اینڈ بیلنس اور مانیٹرنگ سسٹم کے نظام کے وضع کرنے کی بھی خصوصی ہدایت کی ۔

دہشتگردی کسی پاکستانی کا نہیں ، کلبھوشن ، ریمنڈ ڈیو س اور بلیک واٹرز کے ایجنٹوں کا کام ہے ۔سراج الحق

لاہور(ٹی ڈی پی)امیر جماعت اسلامی پاکستان سراج الحق نے کہا ہے کہ ملک میں دہشتگردی کسی پاکستانی کا نہیں ، کلبھوشن ، ریمنڈ ڈیو س اور بلیک واٹرز کے ایجنٹوں کا کام ہے ۔ کلمہ کی بنیاد پر بننے والا اسلامی دنیا کا قائد اور ایٹمی قوت کا حامل پاکستان دشمن کی آنکھوں میں کانٹے کی طرح چبھتا ہے اس لیے اسلام دشمنوں نے پاکستا ن کو ہدف بنارکھاہے ۔عراق ، افغانستان ، یمن اور شام کے بعد وہ پاکستان کو عدم استحکام سے دوچار کرنے کے لیے ہماری قومی یکجہتی کو پارہ پارہ کرنا چاہتے ہیں ۔دہشتگردی پوری قوم کا مسئلہ ہے اسے سندھی ، پنجابی ، پختون اور بلوچی کی لڑائی نہ بنایا جائے۔ پنجاب اور سندھ کی حکومتیں اپنے اپنے صوبوں میں پختونوں اور بلوچوں کے خلاف متعصبانہ سرگرمیوں کا نوٹس لیں اور بلاجواز پکڑ دھکڑ کا سلسلہ فوری ختم کیا جائے ۔ ان خیالات کااظہار انہوں نے منصورہ میں منعقدہ پختون جرگہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ جب تک فوج کی پشت پر عوام نہ ہوں ، دہ کوئی معرکہ سر نہیں کر سکتی ۔ دشمن ہماری قومی یکجہتی کو نقصان پہنچانے کے یے ہمیں قومیت ، لسانیت اور مسلکوں کے اختلافات میں الجھا رہاہے ۔ دہشتگردی کے خاتمہ کے لیے ضروری ہے کہ ہم دشمن کی سازشوں کو ناکام بنانے کے لیے باہمی اتحاد کو قائم رکھیں ۔ انہوں نے کہاکہ پاکستانی پرامن اور محب وطن قوم ہیں جس نے بھارت ، امریکہ اور اسرائیل کی سازشوں کا ڈٹ کر مقابلہ کیاہے ۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان کی سا لمیت اور تحفظ کے لیے ضروری ہے کہ باہمی اختلافات کو ختم کر کے ملک میں اخوت و محبت اور بھائی چارے کو فروغ دیں حکمرانوں کی بداعمالیوں اور کالے کرتوتوں کی وجہ سے آج پاکستان اور پنجاب کو گالیاں مل رہی ہیں اور لسانی تعصبات کو ابھرنے کا موقع مل رہاہے ۔انہوں نے پنجاب اور سندھ میں پختونوں اور بلوچوں کی پکڑ دھکڑ اور کئی کئی دن تھانوں میں بند کر کے تفیش کے نام پر تذلیل اور تضحیک کرنے کی شدید مذمت کرتے ہوئے اسے پاکستان کی سا لمیت سے کھیلنے کے مترادف قرار دیا اور مطالبہ کیا کہ دونوں صوبائی حکومتیں فوری طور پر ان کاروائیوں کا سختی سے نوٹس لیں ۔انہوں نے کہاکہ اسلام پسندوں کو دیوار سے لگانے کے لیے رد الفساد کی آڑمیں سیکولر قوتیں خود دہشتگردی کی سہولت بنی ہوئی ہیں ۔